.

السیدہ زینب داخلے کی کوشش میں حزب اللہ کے 8 کارکن ہلاک

شامی حکومت دنیا کو حلب میں لڑائی کا گمراہ کن تاثر دے رہی ہے: جنرل ادریس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کی فوجی کونسل نے دعوی کیا ہے کہ اس کے جنگجووں نے دارلحکومت کی جنوبی بلدیہ داخلے کی کوشش کرنے والے حزب اللہ کے آٹھ ارکان کو ہلاک کر دیا۔

'العربیہ' سے بات کرتے ہوئے شامی جیش الحر کے سربراہ جنرل سلیم ادریس نے بتایا کہ شامی حکومت اپنے عوام اور عالمی برادری کو حلب اور شہر کے مشرقی علاقوں میں لڑائی کا دھوکہ دے رہی ہے کیونکہ سرکاری فوج کا ان علاقوں میں جیش الحر کو جنگ میں مصروف رکھنے کا دعوی صرف بشار الاسد فوج کا واھمہ ہے۔

جنرل ادریس اس بات کی ضرورت پر زور دیا کہ ان محاذوں پر لڑنا ہماری ذمہ داری ہے، تاہم ان کا کہنا تھا کہ فیصلہ کن لڑائی دمشق اور حمص میں ہو گی کیونکہ نسلی اور فرقہ وارنہ امیتازات میں یقین رکھنے والی بشار الاسد حکومت حمص میں خاص طور پر سخت لڑائی لڑ رہی ہے۔

جنرل ادریس نے مزید بتایا کہ شامی حکومت کی پہلی ترجیح حمص ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ شام کے اندر فرقہ وارانہ ریاست نہیں بننے دیں گے کیونکہ بشار الاسد اپنی حکومت کی ناکامی کی صورت میں حمص اور ساحلی علاقوں میں فرقہ وارانہ بنیادوں پر اپنے زیر تسلط علاقوں کو قائم نہیں رکھ سکیں گے۔