مصر میں ''فوجی انقلاب'' کی تیاریاں، مرسی پر سفری پابندی عاید

صدر محمد مرسی، محمد بدیع اور خیرت الشاطر کو بیرون ملک جانے سے روک دیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصر کے صدر محمد مرسی کے ایک مشیر کا کہنا ہے کہ ملک میں اس وقت فوجی بغاوت کی تیاریاں کی جا رہی ہیں لیکن یہ خونریزی کے بغیر کامیاب نہیں ہوگا جبکہ صدر کے علاوہ اخوان کی قیادت پر بیرون ملک جانے پر پابندی عاید کر دی گئی ہے۔

اس بے نامی مشیر نے برطانوی خبررساں ادارے رائیٹرز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فوج اور پولیس صدر مرسی کے حامی مظاہرین کو ہٹانے کے لیے تشدد کا استعمال کرسکتے ہیں۔

اے ایف پی نے اطلاع دی ہے کہ مصری سکیورٹی فورسز نے صدر محمد مرسی اور ان کی اتحادی اسلامی جماعتوں کی قیادت پر بیرون ملک سفرکی پابندی عاید کردی ہے۔ان پر یہ پابندی جنوری 2011ء میں سابق صدر حسنی مبارک کے خلاف عوامی احتجاجی تحریک کے دوران ایک جیل کو توڑنے کے الزام میں عاید کی گئی ہے۔

قاہرہ کے ہوائی اڈے کے حکام نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ انھیں صدر محمد مرسی کے علاوہ اخوان المسلمون کے سربراہ محمد بدیع اوران کے نائب خیرت الشاطر کو بیرون ملک روانہ ہونے سے روکنے کے احکامات موصول ہوگئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں