.

قاہرہ میں فوج اور مرسی کے حامیوں میں فائرنگ کا تبادلہ، 7 افراد ہلاک

برطرف صدر کے حامیوں کے ملک کے مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے دارالحکومت قاہرہ اور دوسرے شہروں میں برطرف منتخب صدر محمد مرسی کے حامی احتجاجی مظاہروں کرر ہے ہیں۔قاہرہ میں مظاہرے کے دوران محمد مرسی کے حامیوں اور فوج کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں سات افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

عینی شاہدین کے مطابق برطرف صدر کے حامی قاہرہ میں ری پبلکن گارڈ کے ہیڈ کوارٹرز کے باہر احتجاج کررہے تھے۔اس دوران فائرنگ شروع ہوگئی۔ اے ایف پی کی اطلاع کے مطابق دونوں جانب سے گولیاں چلنے کی آوازیں آ رہی تھیں۔

اے ایف پی کے نمائندے نے بتایا ہے کہ اس نے فائرنگ کے بعد چادر میں لپٹی دولاشیں دیکھی ہیں جبکہ تیسرا شخص سر میں گولی لگنے سے ہلاک ہوا ہے۔تاہم ایک سکیورٹی ذریعے نے واقعے میں ہلاکتوں کی تردید کی ہے۔

فوجیوں اور مظاہرین کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ برطرف صدر کے ایک حامی کی جانب سے ان کی تصویر ری پبلکن گارڈ کے ہیڈکوارٹرز کے باہر لگے خار دار تار پر لٹکانے سے شروع ہوئی تھی۔فوجیوں نے اس شخص کو دو مرتبہ خبردار کیا کہ وہ عمارت کے قریب نہ آئے اور اس کے بعد انھوں نے فائرنگ شروع کردی۔

قاہرہ سے العربیہ کے نمائندے نے اطلاع دی ہے کہ فوجیوں نے صدر مرسی کے حامیوں کو منتشر کرنے کے لیے اشک آور گیس کے گولے چلائے ہیں۔

برطرف صدر مرسی کی سابقہ جماعت اخوان المسلمون اور اس کی اتحادی دوسری اسلامی جماعتوں عوام سے ''فوجی انقلاب'' کے خلاف نماز جمعہ کے بعد مظاہروں کی اپیل کی تھی اور ان مظاہروں کو ''رد جمعہ'' کا نام دیا ہے۔محمد مرسی اپنی حکومت کے خاتمے کے بعد سے کسی نامعلوم مقام پر نظربند ہیں۔انھوں نے اپنے حامیوں پر زوردیا ہے کہ وہ ان کی قانونی اتھارٹی کے دفاع کے لیے میدان میں آئیں۔

ان کے حامیوں نے قاہرہ میں جامع مسجد رابعہ العدویہ کے باہر نماز جمعہ کے بعد فوجی انقلاب کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔اس علاقے میں فوج کی متعدد بکتر بند گاڑیاں کھڑی کی گئی تھیں اور کسی گڑ بڑ سے نمٹنے کے لیے فوج کے اضافی دستے تعینات تھے۔اس موقع پر مظاہرین نے منتخب صدر کا تختہ الٹنے کے لیے فوجی بغاوت کے خلاف سخت نعرے بازی کی اور انھوں نے پورے ملک میں جہاد کا اعلان کیا۔

درایں اثناء مصر کی مسلح افواج نے کہا ہے کہ لوگوں کو پرامن طور پر احتجاج کا حق حاصل ہے لیکن ساتھ ہی اس نے مظاہرین کو سول نافرمانی پر انتباہ کیا ہے۔ ایک فوجی ذریعے کا کہنا ہے کہ مرسی کے حامیوں اور مخالفین کے درمیان کسی محاذ آرائی کو روکنے کے لیے فوجی دستوں کی تعیناتی کا عمل جاری رہے گا اور فضا میں جیٹ طیارے بھی پروازیں کرتے رہیں گے۔آج بھی دارالحکومت کی فضا میں جیٹ طیارے فضا میں پرواز کرتے رہے ہیں۔