حمص محاذ پر روزانہ اسلحہ کی سپلائی جاری ہے: سربراہ جیش الحر

الخالدیہ کالونی پر مسلسل نو روز سے گولا باری جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شامی جیش الحر کے کمانڈر انچیف سلیم ادریس نے تصدیق کی ہے کہ روزانہ کی بنیاد پر حمص کے محاذ کو اسلحہ اور گولا بارود کی کھیپ فراہم کی جا رہی ہے۔ مسلح افواج کے چیف آف سٹاف کے مطابق حمص محاذ پر اسلحہ فراہمی کا مکمل دستاویزی ثبوت موجود ہے۔ ان خیالات کا اظہار جنرل سلیم ادریس نے حمص کے محاذ پر بشار الاسد نواز فوج کی مسلسل نویں روز شدید ترین گولا باری کے موقع پر کیا ہے۔ حمص کی الخالدیہ کالونی پر سرکاری فوج کے زمینی اور فضائی حملے جاری ہیں۔

شامی انقلاب کی کمان کونسل کے مطابق الخالدیہ کالونی کے اردگرد موجود آرمر گاڑیوں سے کالونی پر شدید گولا باری کی جا رہی ہے۔ شامی فوجی دستے الخالدیہ کالونی پر کئی سمتوں سے چڑھائی کے لئے ہاتھ پاوں مار رہے ہیں۔ اس مقصد کے لئے اسدی فوج اور جیش الحر کے جنگجووں کے درمیان شدید لڑائی جاری ہے۔ جیش الحر نے سرکاری فوج کی شہر کے مرکزی علاقوں کی جانب پیش قدمی کو تاحال روک رکھا ہے۔

ادھر حمص میں عینی شاہدین نے 'العربیہ' کو بتایا کہ اتوار کے روز پو پھٹنے کے وقت سے ہی لبنانی ملیشیا حزب اللہ کی حمایت یافتہ شامی فوج نے شہر کے تمام محاذوں پر شدید حملے شروع کر رکھے ہیں۔ ان حملوں میں توپخانے سے لیکر، میزائل، راکٹ لانچرز حتی کہ لڑاکا طیاروں جیسا مہلک اسلحہ استعمال کیا جا رہا ہے۔ جیش الحر بشار الاسد فوج کی پیش قدمی کو دلیرانہ طور پر روکے ہوئے ہے۔

سرکاری فوج کی گولا باری حمص کی قدیم کالونیوں پر بھی کی جا رہی ہے۔ شامی فوج نے گولا باری کے لئے ائر فورس کالج، باب السباع اور الزھراء کالونیوں جیسے بشار الاسد نواز علاقوں کو اپنا بیس کیمپ بنا رکھا ہے۔

اندھا دھند کی جانے والی گولا باری سے شہر کی متعدد عمارتیں مکمل یا جزوی طور پر تباہ ہو چکی ہیں جبکہ حملے میں متعدد افراد ہلاک و زخمی ہو چکے ہیں جن کے باعث ادویہ کی کمیابی کے شکار ہسپتال زخمیوں اور مریضوں سے بھرے پڑے ہیں۔ جان بچانے والی ادویہ کی کمیابی سے مریضوں کا علان ناممکن ہو گیا ہے اور شہر میں بحرانی کیفیت پیدا ہو چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں