.

صدر مرسی کی برخاستگی کے بعد سے العربیہ پر سائبر حملے جاری

حملوں کا مرکز، مصر اور چند دوسرے ممالک ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

العربیہ ویب سائٹس گزشتہ آٹھ دنوں سے مسلسل شدید نوعیت کے سائبر حملوں کی زد میں ہیں۔ یہ حملے جولائی کی تین تاریخ سے بلاتعطل جاری ہیں۔

حملوں میں تیزی اس وقت آئی جب مصری فوج کے کمانڈر انچیف میجر جنرل عبدالفتاح السیسی نے منتخب صدر محمد مرسی کے خلاف عوامی احتجاج کو تشدد کی جانب بڑھتا دیکھ انہیں اقتدار سے الگ کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا۔

العربیہ کے ٹکنالوجی ماہرین کے مطابق ان سائبر حملوں کی ابتدا مصر سے ہوئی لیکن گزشتہ چند دنوں سے ان حملوں کا دائرہ دنیا کے مختلف حصوں تک وسیع ہو گیا۔

ان حملوں کے ذریعے العربیہ ویب سائٹس پر خبروں کی اشاعت کی رفتار کو 'سلو' کرنے کے ساتھ وہاں سے ویڈیوز اور دیگر خبری لوازمے تک رسائی کو مشکل بنایا جا رہا ہے۔

اس صورتحال کے پیش نظر العربیہ کے ویب انفارمیشن ٹکنالوجی ڈیپارٹمنٹ نے اپنے عربی، اردو، انگریزی اور فارسی پورٹلز پر تبصروں اور سرچ کی سہولت کو ان حملوں کو پسپا کرنے کی حکمت عملی کے طور پر معطل کر دیا ہے۔
۔
العربیہ نیوز چینل اور اس کی برادر ویب سائٹس پر دنیا کے مختلف ملکوں سے حملے کئے جا رہے ہیں۔ چینل کی نشریات کو ایک عرصے سے مصر اور لیبیا سے متعدد بار 'جام' کیا جا چکا ہے جبکہ العربیہ کی چار زبانوں میں جاری نیوز ویب سائٹس پر شام، لیبیا سمیت دوسرے ملکوں سے حملے جاری ہیں، تاہم اس کے باوجود ان پورٹلز پر خبریں اپ ڈیٹ کرنے کا عمل بلاتعطل جاری ہے۔