.

شامی بحران، عراق سمیت پورا علاقہ خطرے میں پڑ گیا

ایران کو شام میں مداخلت سے نہیں روکا جا سکتا: عراقی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی وزیر خارجہ ہوشیار زبیری نے کہا ہے کہ شام کا بحران جاری رہنے کی صورت میں عراق سمیت پورے خطے کی سلامتی کے لیے خطرات پیدا ہو سکتے ہیں۔ اپنے ایک تازہ انٹرویو میں عراقی وزیر خارجہ نے واضح کیا کہ شام میں دو سال سے جاری ابتر صورتحال نے عراق کو نازک حالات سے دوچار کیا ہے اور اس صورتحال سے بارڈ ر کے آر پار شیعہ اور سنی فسادات کو ہوا ملی ہے۔ نتیجتا ایران کی شام میں مداخلت کا امکان بھی بڑھ گیا ہےاور اسے مداخلت سے روکا نہیِ جا سکتا۔

انہوں نے بتایا ایران کو رسمی طور پر آگاہ کر دیا گیا ہے کہ اسلحہ کی ترسیل کے لیے اپنی فضائی حدود کے استعمال کی سخت الفاظ میں مذ مت کرتے ہیں۔ہوشیار زبیری نے کہا کہ اگر کوئی ایران سے اسلحہ کی برآمد اور درآمد روکنے کے لیے یہ پروازیں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے خلاف تصور کرے تو میں بذات خود آپ کو اپنی گورنمنٹ کی طرف سے مدعو کرتا ہوں کہ ان پروازوں کو عراقی فضائی حدود میں روکنے کے لیے ہمارا ساتھ دیں۔

درایں اثناء وزیر خارجہ نے کہا کہ عراق شام کو کسی قسم کے ہتھیار اور پیسوں کی ترسیل میں ملوث نہیں اور خاص طور پر دمشق کی درخواست کے باوجود خام تیل کی فراہمی بھی مناسب حد سے زیادہ نہیں کررہا۔