محمد البرادعی نے مصر کے نائب صدر کا حلف اٹھا لیا

عبوری کابینہ کی تشکیل کے لیے بات چیت جاری،نبیل فہمی وزیرخارجہ بننے پر آمادہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے معروف لبرل لیڈر اور جوہری توانائی کے عالمی ادارے کے سابق سربراہ محمد البرادعی نے مصر کے نائب صدر برائے خارجہ تعلقات کے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے۔

عبوری صدر عدلی منصور نے گذشتہ ہفتے حازم الببلاوی کو عبوری وزیراعظم اور محمد البرادعی کو نائب صدر مقرر کیا تھا۔البرادعی کو پہلے عبوری وزیراعظم بننے کی پیش کش کی گئی تھی لیکن ڈاکٹر محمد مرسی کی تین جولائی کو برطرفی کے بعد نئی عبوری کابینہ کی تشکیل کے لیے مذاکرات کے عمل میں شریک سلفی تحریک کی جماعت حزب النور نے وزارت عظمیٰ کے لیے ان کے نام پر اعتراض کیا تھا اور صرف حازم الببلاوی کے نام پر رضامندی ظاہر کی تھی۔

درایں اثناء مصر کی عبوری کابینہ کی تشکیل حازم الببلاوی اور وزارتوں کے امیدواروں کے درمیان اتوار کو بھی بات چیت جاری ہے اور امریکا میں مصر کے سابق سفیر نبیل فہمی نے عبوری وزیرخارجہ بننے پر رضامندی ظاہر کردی ہے۔

مصری ذرائع کے مطابق عبوری کابینہ آیندہ منگل یا بدھ کو حلف اٹھا لے گی۔اس میں زیادہ ٹیکنو کریٹس شامل کیے جائیں گے اور وزیراعظم حازم الببلاوی بھی صرف اہل افراد کو کابینہ میں شامل کرنے پر زوردے رہے ہیں۔انھوں نے اخوان المسلمون کو بھی نئی کابینہ میں شمولیت کی دعوت دی تھی لیکن اخوان نے یہ پیش کش مسترد کردی ہے۔

مصر میں نئی کابینہ کی تشکیل کے لیے مذاکرات کے ساتھ ہی ساتھ یہ اطلاع بھی سامنے آئی ہے کہ پراسیکیوٹرز برطرف صدر محمد مرسی اور ان کی سابقہ جماعت کے خلاف لوگوں کو تشدد پر اکسانے اور جاسوسی کے الزام میں فوجداری شکایات کا جائزہ لے رہے ہیں۔

پبلک پراسیکیوٹر کے دفتر کا کہنا ہے کہ اسے ایسی شکایات موصول ہوئی ہیں جن میں ڈاکٹر مرسی اور اخوان المسلمون کے کارکنان پر جاسوسی ،مظاہرین کی ہلاکتوں کی شہ دینے اور ملکی معیشت کو نقصان پہنچانے کے الزامات عاید کیے گئے ہیں۔قاہرہ سے العربیہ کے نمائندے نے اطلاع دی ہے کہ پراسیکیوٹر کا دفتر ان شکایات کی تحقیقات کررہا ہے اور الزام علیہان سے پوچھ گچھ کی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں