اسدی فوج کے صوبہ ادلب میں فضائی حملے، 29 افراد ہلاک

افطار سے چندے قبل حملوں کے مہلوکین میں 8 خواتین اور 6 بچے بھی شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شامی فوج نے شمال مغربی صوبہ ادلب میں واقع بعض دیہات پر فضائی حملے کیے ہیں جس کے نتیجے میں انتیس افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

لندن میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق کی اطلاع کے مطابق شامی فوج نے پانچ مختلف فضائی حملے کیے ہیں۔سب سے تباہ کن فضائی حملہ ایک گاؤں مغرا پر کیا گیا ہے جہاں راکٹ گرنے کے نتیجے میں تیرہ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

آبزرویٹری کے بیان کے مطابق یہ حملے اتوار کی شام افطار سے چندے قبل کیے گئے تھے۔مرنے والوں میں آٹھ خواتین اور چھے بچے بھی شامل ہیں۔آبزرویٹری نے اپنے نمائندوں کے حوالے سے ہلاکتوں کی تفصیل میں بتایا ہے کہ البراء گاؤں پر حملے میں چھے افراد ہلاک ہوئے ہیں۔باسمیس میں چار ،کفرنبل میں تین اور ابلین میں بھی تین افراد مارے گئے ہیں۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کی اطلاع کے مطابق حکومت مخالف کارکنان کی جانب سے آن لائن پوسٹ کی گئی ویڈیو میں بتایا گیا ہے کہ مغرا گاؤں پر راکٹ حملہ کیا گیا تھا اور اس حملے کے بعد متعدد افراد مکان کے ملبے تلے زندہ دب کررہ گئے۔ویڈیومیں ایک کارکن کا کہنا تھا کہ ''جبل الزاویہ کے مسلمانوں کا یہ افطار ہے''۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں