حماس کے رکن پارلیمان اور ایک سابق وزیر کو سزائے قید

محمد طوطح سمیت حماس کے 12 ارکان پارلیمان اسرائیلی حراست میں ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی عدالت نے مشرقی یروشلم کے ریڈ کراس دفتر میں ڈیڑھ برس سے پناہ لیے ہوئے حماس کے دو رہنماوں کو اڑھائی اڑھائی برس قید کی سزا سنائی ہے۔

اسرائیلی سیکورٹی اداروں نے انہیں عالمی ریڈ کراس کے دفتر گرفتار کیا تھا۔ یروشلم کی ضلعی عدالت نے یروشلم امور کے سابق وزیر احمد ابو عرفہ اور حماس کے ممبر پارلیمان محمد طوطح کو اسرائیل میں بغیر اجازت رہائش رکھنے اور مبینہ طور پر دہشت گرد تنظیم سے تعلق کے الزام میں سزا سنائی ہے ۔ مشرقی یروشلم کے قریب شیخ جراح کےعلاقے ریڈ کراس کی بین الاقوامی کمیٹی کے دفتر میں دونوں ارکان 1 جولائی 2010 سے پناہ گزین تھے، جہاں سے انہیں اسرئیلی پولیس نے ریڈ کراس کی پروا نہ کرتے ہوئے 23 جنوری 2012 کو گرفتار کر لیا تھا ۔

پولیس ذرائع کے مطابق اٹھارہ ماہ پہلے اسرائیلی شناختی کارڈ کی معیاد ختم ہونے کے باوجود دونوں افراد کی اسرائیل میں رہائش غیر قانونی قرار دی گئی۔ سزا کا تعین جمعرات کے روز کیا گیا تھا مگر عدالت نے رسمی طور پر اتوار کے روز میڈیا کو فیصلہ سے آگاہ کیا۔واضح رہے کہ رام اللہ میں فلسطینی اتھارٹی کی قانون ساز کونسل میں 132 ارکان میں سے74 ارکان کا تعلق حماس سے ہے۔ جن میں محمد طوطح سمیت 12 ارکان اسرائیلی جیلوں میں سالہا سال سے بند ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں