لبنانی اسپتال میں زیر علاج 30 شامی زخمی زبردستی بے دخل

مریضوں کو بل ادا نہ کرنے پر نکالا گیا: اسپتال کا موقف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

لبنان کے ایک اسپتال میں زیرعلاج تیس شامی مریضوں کو زبردستی بے دخل کردیا گیا ہے جبکہ اسپتال کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ان شامیوں کو بلوں کی عدم ادائی کی بنا پر نکالا گیا ہے۔

شمالی لبنان میں شامی مہاجرین کے مددگار ایک ادارے کے ڈائریکٹر خالد مصطفیٰ نے بتایا ہے کہ ''منیۃ میں واقع علم الدین اسپتال نے تیس شامی زخمیوں کو نکال باہر کیا ہے۔یہ لوگ القصیر میں لڑائی میں زخمی ہوئے تھے''۔

شمالی لبنان میں واقع اس اسپتال میں القصیر میں شامی باغیوں اور سرکاری فوج کے درمیان لڑائی میں زخمی ہونے والے بیسیوں شامی شہری زیرعلاج ہیں۔خالد مصطفیٰ کا کہنا ہے کہ زخمی شامیوں کو اسپتال سے زبردستی نکالا گیا ہے اور ان کی توہین کی گئی ہے۔ان میں سے اسّی فی صد کی ہڈیاں ٹوٹی ہوئی تھیں اور ان کے سپلنٹس ان کی صحت کی کسی تشویش کے بغیر ہی اتار دیے گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں