.

شامی نائب وزیراعظم آیندہ سوموار کو ماسکو جائیں گے

روسی وزیر خارجہ سے مجوزہ عالمی امن کانفرنس پر بات چیت کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے نائب وزیراعظم قادری جمیل آیندہ سوموار کو ماسکو جائیں گے جہاں وہ روسی وزیرخارجہ سرگئی لاروف سے مجوزہ امن کانفرنس کے بارے میں بات چیت کریں گے۔

روسی وزارت خارجہ نے جمعہ کو ایک بیان میں ان کے اس دورے کی اطلاع دی ہے مگر اس کی مزید تفصیل نہیں بتائی۔قادری جمیل ایسے وقت میں ماسکو جارہے ہیں جب امریکا اور روس شامی صدر بشارالاسد کی حکومت اور حزب اختلاف کے درمیان جنیوا میں دوسری امن کانفرنس کے انعقاد کے لیے کوشاں ہیں۔

لیکن گذشتہ ماہ شامی حزب اختلاف کے بڑے گروپ نے اس کانفرنس میں شرکت سے انکار کردیا تھا۔حزب اختلاف کے قومی اتحاد کے سربراہ جارج صبرا نے تب استنبول میں ایک نیوز کانفرنس میں کہا کہ ''اس وقت شام میں جو کچھ ہورہا ہے،اس نے بحران کے حل کے لیے کسی بین الاقوامی کانفرنس کے انعقاد یا سیاسی اقدام سے متعلق تمام دروازے بند کردیے ہیں''۔

شامی حزب اختلاف میں شامل گروپ ملک میں گذشتہ سوا دوسال سے جاری خانہ جنگی کے خاتمے کے لیے صدر بشارالاسد سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کررہے ہیں لیکن اسد حکومت ان کا یہ مطالبہ تسلیم کرنے کو تیار نہیں اور اس کے علاوہ اب بین الاقوامی سطح پر بھی اس مطالبے پر زیادہ زور نہیں دیا جارہا ہے۔

روس شامی صدر کا سب سے بڑا پشتی بان ملک ہے اور وہ ان کے اقتدار چھوڑنے کی کسی بھی تجویز کی مخالفت کررہا ہے۔روسی وزیرخارجہ سرگئی لاروف ایک سے زاید مرتبہ یہ بات کہہ چکے ہیں کہ بشارالاسد کی اقتدار سے رخصتی شامی بحران سے متعلق ماضی میں طے پائے بین الاقوامی سمجھوتوں کا حصہ نہیں ہے۔اس لیے ایسی کسی تجویز پر عمل درآمد ناممکن ہے۔