چار زخمی شامی اسرائیلی اسپتال میں زیرعلاج

شامیوں کی قنیطرہ کراسنگ کے ذریعے بحرجلیل کے شمال میں واقع اسپتال میں منتقلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں جاری خانہ جنگی میں زخمی ہونے والے چار افراد کو اسرائیل کے ایک اسپتال میں منتقل کیا گیا ہے۔ ان میں ایک آٹھ سالہ بچی بھی شامل ہے۔

ان شامیوں کو اسرائیل اور شام کے درمیان حد متارکہ جنگ (سیزفائرلائن) پر واقع قنیطرہ کراسنگ کے ذریعے بحر جلیل کے شمال میں واقع زیف اسپتال میں منتقل کیا گیا ہے۔ اسپتال کے ایک ترجمان نے بتایا ہے کہ کل رات ایک آٹھ سالہ بچی اور اس کی اڑتالیس سالہ ماں کو اسپتال لایا گیا۔ان کے بازوؤں اور ٹانگوں کی ہڈیاں ٹوٹی ہوئی ہیں۔ اس لڑکی اور اس کی والدہ نے اسپتال کے عملے کو بتایا کہ ان کے مکان کے نزدیک دھماکا ہوا تھا جس سے وہ شدید زخمی ہوگئیں۔

ایک اور شامی کو بھی علاج کے لیے اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ اس کی عمر بیس،تیس سال کے درمیان ہوگی۔اس کے سر میں شدید چوٹ آئی ہے اور اس کا ٹراما یونٹ میں علاج کیا جارہا ہے۔ ترجمان کے مطابق منگل کی صبح ایک پندرہ سالہ لڑکی کو بھی لایا گیا ہے۔ اس کی ایک ٹانگ کٹی ہوئی ہے اور معدے میں زخم ہیں۔

اسرائیلی فوج نے ان زخمیوں کو سیز فائرلائن عبور کر کے اپنے علاقے میں آنے کی اجازت دی تھی اور صہیونی فوجیوں ہی نے ان کو الریف اسپتال منتقل کیا ہے۔

واضح رہے کہ شام میں مارچ 2011ء سے صدر بشارالاسد کے خلاف جاری عوامی احتجاج تحریک کے دوران پینتالیس شامیوں کا زیف اسپتال میں علاج کیا جاچکا ہے۔ ان میں سے نو افراد ابھی تک وہیں زیرعلاج ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں