.

لیبیا میں امارات کے سفارت خانے پر راکٹ حملہ

جانی نقصان نہیں ہوا، ہو سکتا ہے حملے کا ہدف ہوٹل ہو: وزیر داخلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کے دارالحکومت میں قائم متحدہ عرب امارات کے سفارت خانے پر جمعرات کی صبح ایک حملہ کیا گیا ہے ، جسے سفارتی اور سکیورٹی ذرائع ن ے راکٹوں اور گرینیڈوں سے کیا گیا حملہ قرار دیا ہے۔

مبینہ طور پر سفارت خانے کو نشانہ بنانے کے لیے سفارت خانے کے پڑوس اور تریپولی کے مغربی حص ے میں موجود شیعہ آبادی کی طرف سے راکٹ اور گرینیڈ فائر کیے گئے۔ وزارت داخلہ کے ترجمان رامی کال کے مطابق سفارت خانے پر ہونے والے حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے ، تاہم اس سلسلے میں تحقیقات جاری ہیں۔

لیبیا کے وزیر داخلہ خلیفہ الشیخ نےاس حملے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ''ہو سکتا ہے یہ حملہ سفارت خانے سے متصل ایک بڑے ہوٹل کورینشیا کو نشانہ بنانے کے لیے کیا گیا ہو'' واضح رہے اماراتی سفارت خانہ کے قریب تر واقع یہ ہوٹل غیر ملکی حکام اور کاروباری شخصیات کے قیام اور سر رمیوں کے لیے استعمال ہوتا ہے۔ معمر قذافی کے اتدار کے خاتمے کے بعد مسلح گروپ لیبیا میں غیر ملکی سفارت کاروں اورسفارتی مشنوں کو متعد د بار نشانہ بنا چکے ہیں۔