.

سیناء کے علاقے میں مصری فوج کی بکتر بند گاڑی پر گولا باری

60 قبائلی سرداروں نے فوجی تعاون کے لئے خون سے معاہدہ لکھ دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے علاقے جزیرہ نما سیناء میں جمعہ کے روز سرکاری فوج کی بکتر بند گاڑی پر راکٹ حملے میں ایک افسر اور سپاہی زخمی ہو گئے۔ اسی دوران نامعلوم دہشت گرد جنگجوؤں نے شمالی سیناء میں مصری فوج کے تین ٹھکانوں پر حملہ کیا۔ العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق حملے میں راکٹ سے چلنے والے گرینڈ استعمال کئے گئے۔

ادھر مصری فوج کے ترجمان نے اعلان کیا ہے کہ جزیرہ نما سیناء کے علاقے سے تعلق رکھنے والے 60 قبائل نے ایک معاہدے پر دستخط کئے ہیں۔ معاہدے کے تحت یہ قبائل علاقے میں دہشت گردوں کی بڑھتی ہوئی کارروائیوں کے خاتمے کے لئے مصری فوج سے تعاون کریں گے۔

شمالی اور جنوبی سیناء سے تعلق رکھنے والے قبائلی زعماء اور سرداروں نے مصری فوج کے سربراہ میجر جنرل عبدالفتاح السیسی اور وزیر دفاع کی اس کال پر لبیک کہا ہے جس میں انہوں نے متحدہ ہو کر مصر کی تاریخ کے اہم مرحلے پر دہشت گردی کے خاتمے پر زور دیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق قبائلی سرداروں نے معاہدے پر دستخط اپنے خون سے کئے ہیں۔ یہ معاہدہ عبوری وزیر مملکت برائے دفاع محمد صابر نے سیناء کے عرب قبائلی سربراہوں سے ملاقات میں کیا۔ معاہدے میں یہ بات زور دیکر کہی گئی ہے سیناء کے قبائل مصری فوج کا جزو لا ینفک ہیں، ان کی مدد کے بغیر مسلح فوج ملکی دفاع کا فریضہ احسن طریقے سے ادا نہیں کر سکتے۔