.

بغداد: یکے بعد دیگرے سات علاقوں میں نو کار بم دھماکے

چونتیس افراد جاں بحق، کم از کم 129 افراد زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بغداد کے مختلف علاقوں میں پیر کے روز یکے بعد دیگرے ہونے والے متعد د کار بم دھماکوں کے نتیجے میں کم از کم 34 افراد جاں بحق ہو گئے ہیں ۔

عالمی خبر رساں اداروں کے کے مطابق پورے بغداد کو لرزا دینے والے کُل نو دھماکے سات مختلف علاقوں علاقے میں ہوئے ہیں ۔ ایک کے بعد ایک اور دھماکے ایک سیریز کی صورت تھے جن کے نتیجے میں کم از کم 129 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ ان دھماکوں میں سے پانچ دھماکے شیعہ اکثریتی علاقوں میں ہوئے جبکہ ایک دھماکہ بغداد کے جنوب میں محمودیہ کے علاقہ میں ہوا ہے۔

میڈیا رپورٹس میں جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق جولائی کے شروع سے اب تک بغداد میں 770 افراد تشدد کی اس لہر کی نذر ہوگئے ہیں، جبکہ سال 2013ء کے شروع سے لے کراب تک 3000 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔

جنگ زدہ عراق گزشتہ کئی برسوں سے جارحیت اور دہشت گردی کی کاروائیوں کا نشانہ بنا ہوا ہے۔ مبصرین کا کہنا ہے کہ عراقی حکومت کی جانب سے سنی اقلیت کے مسائل حل کرنے میں ناکامی کی وجہ سے اس سال تشدد کی لہر میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔