.

جزیرہ نما سیناء میں اسلام پسندوں کے مزارات پر حملے

شمالی سیناء میں حملوں سے دو مصری فوجی زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے علاقے جزیرہ نما سیناء میں ہونے والے بم دھماکوں سے دو مزارت کو شدید نقصان پہنچا ہے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی 'مینا' کے مطابق دھماکوں کا ہدف بننے والا ایک مزار شمالی سیناء کے علاقے بر العبد میں واقع تھا جبکہ انتہا پسندوں کی دہشت گردی کا نشانہ بننے والا دوسرا مزار سیناء کے دور افتادہ جنوبی علاقے المغارہ میں واقع تھا۔

سیناء کے بعض علاقوں پر کنٹرول حاصل کرنے والے عسکریت پسند مسلمان صحابہ یا اولیا اللہ کے ان مزارت کو خلاف اسلام سمجھتے ہیں اور اسی وجہ سے انہیں نشانہ بناتے ہیں۔

جنوبی سیناء کا علاقہ ہمیشہ سے شورش کا شکار رہا ہے جس کا انتہاء پسند مسلمانوں نے صدر حسنی مبارک کی اقتدار سے بیدخلی کے بعد پیدا ہونے والے خلا سے فائدہ اٹھایا اور اسے مصر کے اندر حملوں کے لئے ڈھال کے طور پر استعمال کیا۔

مصر میں صدر محمد مرسی کی تین جولائی کو معزولی کے بعد سے سیکیورٹی فورسسز پر حملوں میں بہت زیادہ اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔