.

غیر ملکی سفیروں کی زیر حراست اہم ترین اخوان رہنما سے ملاقات

خیرت الشاطر سے ہونے والی ملاقات کے بعد بھی اخوان کا دھرنا جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں سیاسی بحران سے نمٹنے اور حالات کو مزید خونریزی کی طرف بڑھنے سے روکنے کی کوشش کے طور پر قاہرہ میں میں موجود بعض غیر ملکی سفیروں نے پیر کو علی الصباح جیل میں اخوان المسلمون کے اہم رہنما خیرت الشاطر سے ملاقات کی ہے۔ ملاقات کرنے والوں میں عرب ملکوں کے علاوہ یورپی ملکوں کے سفیر بھی شامل ہیں۔ یہ بات مصر کے سرکاری خبر رساں ادارے 'مینا' کی طرف سے سامنے آئی ہے۔

مڈل ایسٹ نیوز ایجنسی 'مینا' کے مطابق مصر کے پراسیکیوٹر کی اجازت سے غیر ملکی سفیروں نے یہ ملاقات کی ہے۔ اخوان المسلمون کے نائب صدر خیرت الشاطر اخوان کے سب سے بڑے سیاسی حکمت ساز سمجھے جاتے ہیں ۔ انہیں مصر کے منتخب صدر مرسی کی برطرفی کے فوری بعد گرفتار کر لیا گیا تھا۔

ابتدائی طور پر سامنے آنے والی اطلاعات کے مطابق غیر ملکی سفیروں کی یہ ملاقات ان کوششوں کا حصہ ہے جو اصلاح احوال کے لیے شروع کی گئی ہیں، تاہم ابھی اس ملاقات کے حاصل کے حوالے کچھ سامنے نہیں آیا ہے کہ ملاقات کامیاب رہی یا نہیں ۔

درایں اثناء برطرف کیے گئے صدر کے ہزاروں حامیوں کا قاہرہ میں ایک ماہ سے زائد عرصے پر پھیلا دھرنا جاری ہے۔ مصری عبوری حکومت نے مرسی حامیوں کے اس دھرنے کو قومی سلامتی کے لیے خطرہ قرار دے رکھا ہے۔ واضح رہے فوج کے ہاتھوں برطرفی کے بعد ڈاکٹر مرسی کو نامعلوم مقام پر زیر حراست رکھ کے ان سے تفتیش کی جا رہی ہے۔