.

لبنان کی حدود میں در انداز چار صہیونی فوجی دھماکے میں زخمی

اسرائیلی فوجی لبنان کے سرحدی علاقے میں 400 میٹر اندر تک گھس آئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کے سرحدی علاقے میں دراندازی کرنے والے صہیونی فوجی بارودی سرنگ کے دھماکے میں زخمی ہوگئے ہیں۔

لبنانی فوج نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ اسرائیلی فوجی بدھ کی صبح ساحلی قصبے ناقورہ کے نزدیک واقع علاقے لبونہ میں چار سو میٹر اندر تک گھس آئے تھے۔اس دوران وہاں دھماکے سے بعض فوجی زخمی ہوگئے ہیں۔

لبنانی فوج نے صہیونی فوجیوں کی دراندازی کو اپنے ملک کی خود مختاری کی ایک نئی خلاف ورزی قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ اس واقعہ کی تحقیقات کی جارہی ہے۔لبنان کے سرحدی علاقے میں 2006ء میں حزب اللہ اور اسرائیل کے درمیان چونتیس روزہ جنگ کے بعد اس نوعیت کا یہ پہلا واقعہ ہے۔

لبنان کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نیشنل نیوز ایجنسی (این این اے) کی اطلاع کے مطابق جب بارودی سرنگ کا دھماکا ہوا ہے تو اس وقت اسرائیلی فوجی لبنانی علاقے کے ایک سو پچاس میٹر اندر تک موجود تھے۔

دوسری جانب اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اسرائیل کی شمالی سرحد کے نزدیک ایک بم دھماکا ہوا ہے جس کے نتیجے میں چار فوجی زخمی ہوئے ہیں۔

انتہا پسند اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے ملک کے جنوب میں ایک فوجی اڈے کے دورے کے موقع پر زخمی فوجیوں کی جلد صحت یابی کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کیا ہے اور کہا کہ ہم اسرائیل کی سرحدوں کے دفاع کے لیے ذمے دارانہ اقدامات جاری رکھیں گے۔

اب ظاہر ہے کہ صہیونی وزیراعظم اپنے فوجیوں کی لبنانی علاقے میں دراندازی پر کوئی جارحانہ بیان تو جاری نہیں کرسکتے تھے۔اس لیے انھوں نے پڑوسی ملک کے سرحدی علاقے میں گھس کر اپنے ملک کی سرحدوں کے دفاع پر ہی اکتفا کیا ہے۔

اسرائیلی فوج نے قبل ازیں ایک بیان میں کہا کہ ''فوجی رات کو شمالی سرحد سے ملحقہ علاقے میں سرگرمی میں زخمی ہوئے ہیں لیکن اس نے یہ نہیں بتایا کہ وہ تربیتی مشق یا کسی جنگی کارروائی کے دوران زخمی ہوئے ہیں۔واضح رہے کہ اسرائیل کے شمال میں لبنان اور شام کی سرحدیں ہیں۔