.

القاعدہ حامی گروپ کی جیلوں پر حملوں کی دھمکی

ساتھیوں کی جان بچانا اپنے اوپر قرض سمجھتے ہیں:ناصر الوہائیشی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جزیرہ نما عرب میں القاعدہ کے متحرک حامی گروہ '' اے کیو اے پی '' نے دھمکی دی ہے کہ ''جیلوں میں بند اپنے ساتھیوں کو رہا کرانے کے لیے جیلیں توڑی جائیں گی۔'' اس امر کا اعلان'' اے کیو اے پی'' کے سربراہ ناصر الوہائیشی نے پیر کے روز کیا ہے۔ القاعدہ گروپ کے لیڈر کے مطابق اسیری زیادہ دیر نہیں چلے گی، جیلیں توڑنے کا سلسلہ جلد شروع ہو گا۔

جیلوں میں بند اسیران کے حوالے سے ایک خط میں ناصر الوہائیشی نے کہا ہے کہ '' تمہارے بھائی جیلوں کی دیواریں گرانے کے قریب ہیں اور فتح اب دور نہیں ہے۔'' مزید کہا'' ہم سب ایک ہی کشتی کے سوار ہیں اس لیے کوئی عشرے پر سوار ہے یا نہیں ہر کسی پر دوسرے کی زندگی بچانا ایک قرض کی حیثیت رکھتا ہے۔''

ناصرالوہائیشی 2007 میں جزیرہ نما عرب میں القاعدہ کے اس حامی گروہ کا سربراہ بنا تھا اور اس نے جولائی 2011 میں اسامہ بن لادن کے جانشین ایمن الظواہری کی اطاعت قبول کی تھی۔ پیر کے روز یہ بیان یمنی گیس تنصیبات پر القاعدہ حملے کے ایک روز بعد سامنے آیا ہے۔ یاد رہے گیس تنصیبات پر حملے میں پانچ یمنی فوجی مارے گئے تھے، جبکہ امریکی ڈرون حملوں کے باعث 28 جولائی سے اب تک 38 عسکریت پسند لقمہ اجل بن گئے ہیں۔

ان حالات میں القاعدہ گروپ کا یہ اعلان متعلقہ ممالک میں امن وامان کے حوالے سے مشکلات کا سبب بن سکتا ہے، کیونکہ ایسا ہی ایک بیان چند روز قبل القاعدہ کے سر براہ ڈاکٹر ایمن الظواہری کی طرف سے بھی سامنے آچکا ہے۔