.

انٹرنیٹ پر العربیہ اور بی بی سی عربی کے میزبانوں میں جعلی لڑائی کی تشہیر

بلاگ سائٹس پر جعلی اکاؤنٹس بنا کر ساکھ مجروح کرنے کی مذموم مہم پکڑی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب دنیا میں دو مقبول عام ٹی وی چینلز العربیہ اور بی بی سی عربی نے اپنے میزبانوں سے سوشل میڈیا اور بعض ویب سائٹس پر غلط طور پر منسوب ریمارکس کی تردید کردی ہے۔ دونوں چینلز کا کہنا ہے کہ ان کی اعتباریت اور ساکھ کو مجروح کرنے کے لیے اس طرح کے حملے کیے جارہے ہیں۔

العربیہ نیوز چینل اور بی بی سی عربی نے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ ''ان کے دوملازمین کے درمیان جعلی ریمارکس کی آن لائن تشہیر کی گئی ہے۔ اس جعل سازی کا مقصد دونوں چینلز کی ساکھ کو مجروح کرنا تھا''۔

بیان کے مطابق ''بی بی سی اور العربیہ کے دومیزبانوں سمیر فرح اور منتہیٰ الرمحی کے ایک دوسرے کے خلاف من گھڑت الزامات اور بیانات کی بعض ویب سائٹس اور سوشل نیٹ ورکنگ کی سائٹس پرتشہیر کی جاتی رہی ہے۔ دونوں چینلز کی انتظامیہ اس ضمن میں اس بات کی تصدیق کرتی ہے کہ جو کچھ آن لائن شائع کیا گیا، وہ مکمل طور پر جعلی اور نادرست ہے''۔

ان ویب سائِٹس اور آن لائن صفحات نے دونوں میزبانوں کے درمیان جعلی چپقلش سے متعلق تمام مواد بلاگ سائٹس سے حاصل کیا تھا جہاں ان دونوں کے ناموں سے بعض جعل سازوں نے جعلی اکاؤنٹس بنا رکھے تھے مگر یہ مذموم مہم پکڑی گئی ہے۔ تاہم مذکورہ بیان میں دونوں میزبانوں سے منسوب جعلی بیانات یا ان کی نوعیت کے بارے میں کچھ نہیں بتایا گیا۔

العربیہ ٹَی وی چینل کا کہنا ہے کہ اس کی ساکھ اور اعتباریت کو مجروح کرنے کے لیے باقاعدہ طور پر ایک مہم چلائی جارہی ہے۔ اسے منظم جعل سازی اور فریب کاری کا سامنا ہے اور اس کی نشریات میں بھی خلل ڈالا جارہا ہے۔

''حکومتیں اور گروپ ماضی میں میڈیا اور سوشل نیٹ ورکنگ ویب سائٹس کے ذریعے العربیہ ٹی وی چینل کے خلاف مہم چلاتے رہے ہیں۔ ان مہموں کے دوران خاص طور پر نائل سیٹ پر چینل کی نشریات میں خلل ڈالنے کی کوشش کی جاتی رہی ہے لیکن اس کے باوجود اس نے پیشہ واریت کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا اور یہی اس کی مقبولیت اور ساکھ کو برقرار رکھنے کا بنیادی سبب ہے''۔چینل نے ماضی میں جاری کردہ ایک بیان میں کہا تھا۔