.

دمشق: باغیوں کے حملے میں حزب اللہ کے20 جنگجو ہلاک

حزب اللہ کمانڈر کی ہلاکت کے بعد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے صدر مقام دمشق کے نواحی علاقے السیدہ الزینب میں باغیوں کی نمائندہ فوج جیش الحرنے گھات لگا کر لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے بیس جنگجو قتل کر دیے ہیں۔

باغیوں کی ترجمان خبررساں ایجنسی"سانا الثورہ" نے حزب اللہ جنگجوؤں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔ قبل ازیں خبر رساں ایجنسی نے حزب اللہ کے کمانڈر حسام نسر کی ہلاکت کی خبر دی تھی۔ باغیوں کے ذرائع کے مطابق گذشتہ کئی روز سے دمشق کے قریبی قصبوں سیدہ زینب، الحسینیہ اور الذیابیہ میں جیش الحر اور حزب اللہ کے ذیلی بریگیڈ ابو الفضل العباس کے جنگجوٶں کے درمیان گھمسان کی جنگ ہوتی رہی ہے، جس میں دونوں طرف سے بھاری ہتھیاراستعمال کیے گئے تھے۔

گذشتہ جمعہ کو حزب اللہ کے امیرالشیخ حسن نصراللہ نے کہا تھا کہ ضرورت پڑنے پر وہ خود بھی بشارالاسد کی حمایت اور"تکفیری دہشت گردوں" کے خلاف شام کے محاذ جنگ میں اتر سکتے ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ایک ہفتہ قبل بیروت کے قریب حزب اللہ کے کمپلیکس پرکار بم دھماکے میں بھی تکفیری ملوث ہیں۔

خیال رہے کہ شام میں بشارالاسد کی وفادار فوج کے ساتھ باغیوں کی سرکوبی کے لیے حزب اللہ کے جنگجوؤں کی شرکت علاقائی اور بین الاقوامی ذرائع ابلاغ کا موضوع بنا ہوا ہے۔ شام میں بغاوت کی تحریک کے دوران حزب اللہ کے سیکڑوں جنگجو ہلاک ہو چکے ہیں۔ تنظیم کی قیادت کی جانب سے باضابطہ طور پر اپنے "جانباز" شام بھجوانے کی بھی تصدیق کی جاتی رہی ہے۔ حزب اللہ کا کہنا ہے کہ وہ شام میں القاعدہ کےخلاف برسرپیکار ہے جو مزاحمت کی علامت بشارالاسد کی حکومت کو غیرمستحکم کرنے کی سازش کر رہے ہیں۔