.

زیر حراست 38 افراد کی ہلاکت کی تحقیقات کرائی جائیں

مصری عبوری حکومت کو اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے مصر میں جیل منتقلی کے دوران اخوان المسلمون کے زیر حراست 38 حامیوں کی ''پر اسرار '' ہلاکت کی مکمل تحقیقات کرانے کے لیے کہا ہے۔ سیکرٹری جنرل کے مطابق وہ زیر حراست افراد کی اس انداز سے موت پر سخت دل گرفتہ ہیں۔

بان کی مون کے ترجمان ''مارٹن نیسرکی'' نے اس سلسلے میں میڈیا کو بتایا کہ'' سیکرٹری جنرل نے اس واقعے کی ہر پہلو سے تحقیقات کرانے کے لیے کہا ہے تا کہ حقائق سامنے آ سکیں۔ واضح رہے اتوار کے روز مصری سکیورٹی فورسز اخوان کے گرفتار کیے گئے حامیوں کو قاہرہ کے شمال میں قائم ابو زابل جیل منتقل کر رہی تھیں کہ یہ بدترین سانحہ پیش آیا۔

اخوان نے زیر حراست افراد کی اس ہلاکت کی ذمہ داری سکیورٹی فورسز اور عبوری حکومت پر ڈالی تھی۔ بتایا گیا ہے کہ یہ ہلاکتیں فائرنگ اور قیدیوں بھرے ٹرک میں اندھا دھند آنسو گیس کے شیل پھینکنے سے ہوئیں۔

دوسری جانب حکومت نے اس واقعے کی ذمہ داری مبینہ تشدد پسند عناصر پر ڈالی ہے، تاہم عبوری حکومت نے ابھی تحقیقات شروع کرنے عندیہ نہیں دیا ہے۔