.

مقبوضہ فلسطین: اسرائیلی فائرنگ، ایک فلسطینی جاں بحق دو زخمی

امن مذاکرات کی بحالی کے باوجود فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی کارروائیاں جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فوجیوں نے مقبوضہ مغربی کنارے کے جنین مہاجر کیمپ پر چھاپے کے دوران ایک فلسطینی کو فائرنگ کر کے شہید کر دیا جبکہ اسی دوران دو فلسطینی زخمی ہوگئے۔

عینی شاہدین کے مطابق اسرائیلی فوج علی الصبح کیمپ میں داخل ہوئی اور ایک مقامی شخص کو تلاش کرنے لگی۔ اس شخص کی گرفتاری عمل میں آنے کے بعد مقامی نوجوانوں نے احتجاج کیا اور اسرائیلی فوجیوں پر پتھرائو کیا جس کے جواب میں اسرائیلی فوج نے فائرنگ کھول دی۔

جنین ہسپتال کے ڈاکٹروں کے مطابق 20 سالہ ماجد لحلوح سینے میں گولی لگنے کی وجہ سے ہلاک ہوئے اور باقی دونوں نوجوان بھی گولیاں لگنے سے زخمی ہوئے۔

اسرائیلی فوج کی ایک ترجمان کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے جنین میں کارروائی کرتے ہوئے ایک مشتبہ مسلح شخص کو حراست میں لیا اور اس کے بعد اسرائیلی فوجیوں پر دیسی ساختہ بموں اور پتھروں سے حملے کے بعد جوابی فائرنگ کی گئی۔ ان کے مطابق اس تصادم کے نتیجے میں ایک فلسطینی ہلاک اور دو اسرائیلی فوجی زخمی ہوگئے تھے۔

مغربی کنارے میں سال 2013ء کے شروع سے تشدد کے واقعات میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ اقوام متحدہ کے اعداد و شمار کے مطابق اسرائیلی فوجیوں نے اس سال اب تک 11 فلسطینیوں کو شہید کردیا ہے جبکہ سال 2012 میں اسی عرصے کے دوران یہ تعداد تین تھی۔

یاد رہے کہ پچھلے ہفتے کے دوران امریکی ثالثی میں فلسطین اور اسرائیل کے درمیان امن مذاکرات بحال ہوگئے ہیں اور ان مذاکرات کا ایک دور واشنگٹن میں مکمل بھی ہوچکا ہے لیکن اس ماحول میں امن مذاکرات کی بحالی سے کوئی خاطر خواہ نتائج سامنے آنے کی امید نظر نہیں آرہی ہے۔