.

''فلسطین آزاد ہو گیا'': فلسطینی ہیکرز کا گوگل میپ پر وار

گوگل انتظامیہ نے ہیکنگ کی تردید کر دی، یہ معمول ہے ہیکنگ نہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطین کے لیے حاصل کردہ ''گوگل ڈومین'' کو گزشتہ روز اس وقت ہیک کر لیا گیا جب گوگل سے اس امر پر احتجاج کیا گیا ''گوگل میپ'' پر فلسطین کے بجائےاسرائیل کیوں دکھایا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق مبینہ طور پر داد حیج، الظاہر،انرشی وغیرہ کے دستخطوں سےگوگل پیج پر بیان جاری کیا گیا جس میں یہ احتجاج کیا گیا تھا۔

احتجاجی بیان میں ان فلسطینیوں نے لکھا تھا ''انکل گوگل ہم فلسطین سے آداب کہہ رہے ہیں، تا کہ آپ یاد دلا سکیں کہ'' گوگل میپ'' میں دکھائے گئے ملک کا نام اسرائیل نہیں بلکہ اسے فلسطین کہتے ہیں۔'' اسی بیان میں یہ سوال بھی اٹھایا گیا تھا کہ ''اگر ہم گوگل میپ میں ملک کا نام اسرائیل کے بجائے فلسطین کر دیں، تو اس سے کیا ہو جائے گا ؟''

ان مبینہ ہیکرز نے اپنے بیان کے آخر میں ناراض فلسطینیوں کی ایک ویب سائٹ کا لنک بھی دیا ہے۔

اس بارے میں گوگل کے تعلقات عامہ کے شعبے کے رامی کندیل نے العربیہ کو بتایا ''کہ فلسطین میں ڈی این ایس رجسٹری کے ساتھ فلسطین میں یہ مسلہ تھا، جس کے نتیجے میں بعض صارفین گوگل اور چند دوسرے ایک تبدیل شدہ ایڈریس پر جا رہے ہیں۔ یہ مسلہ حل ہو جائے گا۔"

انہوں نے مزید کہا '' گوگل کی فلسطین میں سروسز ہیک نہیں ہوئی ہیں۔ دنیا کے مختلف حصوں میں ایسا ہوتا ہے کہ اگر صارفین گوگل ڈاٹ کام میں جاتے ہیں تو صارفین کو ان کے ہاں کی مقامی گوگل ڈومین کی طرف منتقل کر دیا جاتا ہے۔