لبنان: شامی فوج کے کپتان سمیت پانچ افراد پر بم دھماکوں کی فرد جرم عاید

ملزموں میں دو مذہبی شخصیات شامل، دہشت گردی کا گروہ منظم کرنے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

لبنان کے شمالی شہر طرابلس میں گذشتہ ہفتے دو مساجد کے باہر تباہ کن بم دھماکوں کے الزام میں شامی فوج کے ایک کپتان سمیت پانچ افراد کے خلاف فرد جرم عاید کردی گئی ہے۔

لبنان کے ایک عدالتی عہدے دار نے العربیہ کو بتایا کہ دو مذہبی شخصیات کو بھی 23 اگست کو دو مساجد کے باہر بم دھماکوں کے الزام میں ماخوذ کیا گیا ہے۔ ان دونوں بم دھماکوں میں پنیتالیس افراد ہلاک اور سیکڑوں زخمی ہوگئے تھے۔

عدالتی ذریعے نے بتایا کہ ایک فوجی عدالت نے شیخ احمد غریب اور مصطفیٰ حورے پر ایک مسلح گروپ تشکیل دینے کا الزام عاید کیا ہے۔ انھوں نے مبینہ طور پر سرکاری اداروں پر حملوں کے لیے دہشت گردی کا سیل قائم کیا تھا اور اسی نے طرابلس میں اہل سنت کی دونوں مساجد کے باہر دہشت گردی کے واقعے میں پھوڑے گئے بم تیار کیے تھے۔ لبنان میں 1975ء سے 1990ء تک جاری رہی خانہ جنگی کے بعد یہ سب سے تباہ کن بم دھماکے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں