.

شام کیخلاف جنگی کارروائی نہ کی جائے: برطانوی پارلیمنٹ

پارلیمنٹ کی رائے برطانوی عوام کی رائے ہے، اس پر عمل کرینگے: کیمرون

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانوی پارلیمنٹ نے کیمیائی ہتھیاروں کے باعث شام کے خلاف امکانی جنگی کارروائی کو مسترد کر دیا ہے۔ اس سلسلے میں جمعرات کو پارلیمنٹ میں باضابطہ ووٹنگ ہوئی۔ اکثریت نے شام کے خاف جنگی کارروائی کو مسترد کر دیا ہے۔

ووٹنگ کے بعد وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے عوامی نمائندوں کو یقین دلایا ہے کہ وہ پارلیمنٹ رائے کو برطانوی عوام کی رائے مانتے ہیں ،اس لیے اس کے مطابق عمل کریں گے۔

برطانوی حکومت کو پارلیمنٹ میں شام کے معاملے میں اس وقت شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے جب برطانوی فضائیہ کے چھ آر اے ایف ٹائیفون طیارے اس کے قبرص کے ائیر بیس پر پہنچ چکے ہیں۔ پارلیمنٹ کے اچانک فیصلے نے حکومت کو حیران کر دیا ہے، کیونکہ حکومت اپنے آپ کو پارلیمنٹ کے ووٹ سے پہلے شام کے خلاف امریکی اتحادی کے طور پر جنگی کارروائِی سے محض کچھ دن کے فاصلے پر محسوس کرتی تھی۔

پارلیمنٹ کے ذرائع کے مطابق جنگی کارروائی کے خلاف ووٹ نے اخلاقی طور ڈیوڈ کیمرون اور ان کی حکومت کے ہاتھ باندھ دیا ہیں۔ وزیر اعظم کیمرون نے اسے تسلیم کرتے ہوئے کہا کہ ''یہ واضح ہو گیا ہے کہ برطانیہ کے لوگ جنگی کارروائی نہیں چاہتے اور نہ ہی برطانوی فوج کو اس کارروائی کا حصہ دیکھنے کے حق میں ہیں۔'' کیمرون نے مزید کہا '' میں نے سمجھ لیا ہے اس لیے اس کے مطابق ہی عمل کیا جائے گا۔''