.

خفیہ خریداری؟ جینٹ جیکسن کی دبئی میں عبایا میں نموداری

دبئی کے شاپنگ مرکز میں روایتی اسلامی لباس پہن کر خریداری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مشہور پاپ اسٹار آنجہانی مائیکل جیکسن کی بہن جینٹ جیکسن دبئی میں ایک مرتبہ پھر روایتی اسلامی لباس عبایا میں ملبوس دیکھی گئی ہیں جس سے ان کے بارے میں اس افواہ کو تقویت ملی ہے کہ وہ دائرہ اسلام میں داخل ہوچکی ہیں۔

متحدہ عرب امارات کے کثیرالاشاعت روزنامے گلف نیوز میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق جینٹ جیکسن کو اسی ہفتے دبئی کے ایک شاپنگ مرکز میں عبایا پہن کر خریداری کے لیے آئی تھیں۔ اخبار کو اس امر کی اطلاع خاتون گلوکارہ کے ایک فین نے دی تھی۔ جینٹ نے گذشتہ سال قطر کی معروف کاروباری شخصیت وسام المنا سے شادی کرلی تھی۔

اس فین کے بہ قول ''میرے ایک ساتھی نے جینٹ جیکسن کو دکان کی سیڑھیاں اترتے ہوئے دیکھا۔ میں فوراً اپنی باس کے پاس پہنچا اور ان سے خاتون سے ملنے کی خواہش کا اظہار کیا لیکن میری باس کا کہنا تھا کہ وہ ادھر خریداری کے لیے نہیں آئیں گی''۔

جینٹ کوئی آدھا گھنٹا اس شاپنگ مرکز میں رہی تھیں لیکن انھوں نے کوئی خریداری نہیں کی تھی بلکہ انھوں نے بعض آرڈرز دیے تھے۔ اسی سال کے آغاز میں جینٹ کو قطر میں بھی عبایا پہنے ہوئے دیکھا گیا تھا جبکہ اس وقت یہ افواہیں پھیلی ہوئی تھیں کہ انھوں نے اسلام قبول کر لیا ہے۔

ان کا خلیجی ریاستوں میں آنا جانا لگا رہتا ہے اور انھوں نے 2011ء میں ابوظہبی میں اپنے فن کا مظاہرہ کیا تھا۔ فروری 2013ء میں ان کے نمائندے نے اس بات کی تصدیق کی تھی کہ انھوں نے اور وسام نے 2012ء میں خفیہ شادی کر لی تھی۔

جینٹ کے بھائی آنجہانی مائیکل جیکسن نے بھی کئی مرتبہ ابوظہبی اور دوسرے خلیجی شہروں میں اپنے فن کا مظاہرہ کیا تھا۔ان کے ایک اور بھائی جرمین جیکسن نے 1980ء کے عشرے میں متحدہ عرب امارات کے دورے کے بعد اسلام قبول کر لیا تھا۔