عوام اور لبنانی فوج کے درمیان ہنگامی رابطے کا "سافٹ ویئر" تیار

جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے لبنانی فوج کو خطرات سے آگاہی ممکن ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان میں گذشتہ کچھ عرصے سے جاری دہشت گردی اور تباہ کن بم دھماکوں کے بعد فوج نے ایسے واقعات کی روک تھام کے لیے جدید ٹیکنالوجی سے استفادے کا منفرد طریقہ اختیار کیا ہے۔ لبنانی آرمی کی نگرانی میں ایک سافٹ ویئر تیار کیا گیا ہے جسے موبائل فون میں انسٹال کرنے کے بعد عوام اور فوج کے درمیان رابطہ ممکن ہوگا۔ یوں عوام مسلح افواج اور سیکیورٹی اداروں کو کسی بھی خطرے کی پیشگی اطلاع فراہم کرسکیں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق لبنان آرمی شیلڈ [LAF Shield] کے نام سے موسوم ایپلی کیشن انٹرنیٹ پر بھی دستیاب ہے اور گوگل کے ذریعے تلاش کے بعد مفت ڈاؤن لوڈ کرکے انسٹال کیا جا سکتا ہے۔

سافٹ ویئرکے انجینیئر ماریوھاشم نے اپنی اس انوکھی ایجاد کے بارے میں میڈیا کو بتایا کہ پروگرام کی اسمارٹ ایپلیکیشن کے ذریعے شہریوں کو نہ صرف فوج سے رابطے کی سہولت میسر ہوگی بلکہ وہ کسی بھی مقام سے کسی بھی وقت گاڑی چوری ہونے، مشتبہ گاڑی دیکھنے، دہشت گردی یا تخریب کاری کی کسی بھی کوشش کے بارے میں تصاویراور ویڈیوز کی شکل میں فوج کو مطلع کرسکیں گے۔

اس سافٹ ویئرمیں سیکیورٹی کے حوالےسے حساس اور خطرناک مقامات، ممنوعہ علاقوں کے نقشے،مطلوب دہشت گردوں کی فہرست اور یرغمالیوں کی تفصیلات بھی موجود ہوں گی اور شہری ان کی تلاش میں سیکیورٹی اداروں کی مدد کرسکیں گے۔

خیال رہے کہ لبنان میں عوام اور فوج کے درمیان اسمارٹ فون کے ذریعے رابطوں کے لیے سافٹ ویئر تیار کرنے کا تخیل کوئی چارماہ قبل اس وقت پیدا ہوا جب ملک میں بڑے پیمانے پر دھماکے ہونا شروع ہوئے تھے۔ لبنانی ذرائع ابلاغ کے مطابق تین دن میں یہ سافٹ ویئرگوگل اورAPPLE STORE سے 50 ہزار مرتبہ ڈاؤن لوڈ کیا جا چکا ہے۔ پیش آئند ایام میں اس کی طلب میں مزید اضافے کا امکان دیکھا جا رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں