ایران مخالفین کو عراق میں اپنا کیمپ خالی کرنے کا حکم دے دیا گیا

"مجاہدین خلق" کے اشرف کیمپ میں قتل عام کی تحقیقات جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عراقی حکومت نے ایران مخالف شدت پسند تنظیم "مجاہدین خلق" کو دارالحکومت کے قریب قائم "معسکراشرف" کو فوری طور پر خالی کرنے کے احکامات دیے ہیں۔ یہ احکامات ایک ایسے وقت میں دیے گئے ہیں جب گذشتہ ہفتے کیمپ میں فوجی وردی میں ملبوس مسلح حملہ آوروں نے گولیاں مار کرتنظیم کے 52 ارکان کوقتل کردیا تھا۔

وزیراعظم نوری المالکی کے مشیرعلی الموسوی نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی "اے ایف پی" سے گفتگو کرتے ہوئے اس بات کی تصدیق کی کہ حکومت کی جانب سے مجاہدین خلق کو 'معسکر اشرف' خالی کرنے کے احکامات دیے جا چکے ہیں۔

خیال رہے کہ "مجاہدین خلق" کو ایران کے خلاف سرگرمیوں کی اجازت سابق مصلوب صدر صدام حسین کے دور میں دی گئی تھی۔ صدام حکومت کے خاتمے کے بعد عراق میں ایران نواز حکومت نے تنظیم پرکئی قسم کی پابندیاں عائد کردی تھیں، تاہم ان کے بیس کیمپ سمجھے جانے والے"معسکر اشرف" کو اقوام متحدہ کی جانب سے تحفظ فراہم کیا گیا تھا۔

عالمی ادارے کے اہلکاروں کی اطلاعات کے مطابق بغداد حکام نے وجہ بتائے بغیر مجاہدین خلق کو کیمپ خالی کرنے کے احکامات دیے ہیں اور وہاں پر موجود خاندانوں سے کہا ہے کہ وہ کسی دوسرے مقام پر منتقل ہوجائیں۔ عراقی حکام کی جانب سے اس اقدام کی کوئی فوری وجہ سامنے نہیں آ سکی ہے۔

گذشتہ ہفتے بغداد کے شمالی مشرقی ضلع دیالی میں واقع "معسکراشرف" میں ہونے والی خونریزی کی تحقیقات کے لیے وزیراعظم نوری المالکی نے ایک کمیٹی بھی تشکیل دی تھی۔ یہ کمیٹی تاحال اپنی تحقیقات جاری رکھے ہوئے ہے۔ معسکر اشرف میں 'مجاہدین خلق' کا کہنا ہے کہ حملہ عراقی فوج نے خود کیا ہے۔ انہوں نے ایک ویڈیو فوٹیج بھی جاری کی ہے جس میں کیمپ میں گولیاں چلانے والوں کو سرکاری فوجی وردی میں ملبوس دکھایا گیا ہے۔ تاہم بغداد حکومت نے الزام مسترد کردیا ہے۔ مجاہدین خلق کی حامی اقوام متحدہ اور مغربی حکومتیں بھی خون ریزی کا الزام کسی فریق پر لگانے میں احتیاط سے کام لے رہی ہیں۔

بغداد میں اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن کے حکام کا کہنا ہے کہ حکومت نے معسکر اشرف کا بیشتر حصہ پہلے ہی خالی کرا لیا ہے۔مجاہدین خلق کے لوگ بغداد کے قریب "لیبرٹی کیمپ" میں پہنچائے گئے ہیں۔ معسکر اشرف میں رہ جانے والے باقی ماندہ افراد کو فوری طورپر لیبرٹی کیمپ ہی میں پہنچنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں