.

مصر: معزول صدر کے اثاثہ جات کی تحقیقات بھی شروع

مرشد عام اور انکے نائب سمیت اخوان کے 14 رہنماوں کے اثاثے منجمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کی عبوری حکومت نے معزول کیے گئے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی و خاندان کے اثاثہ جات کی چھان بین شروع کردی ہے۔ مصری میڈیا کی رپورٹس کے مطابق عبوری حکومت کے پراسیکیوٹر نے اس سلسلے میں تحقیقات انسداد بدعنوانی سے متعلق ایسوسی ایشن کی طرف سے دائر کردہ درخواست پر شروع کی ہیں۔

فوج کے سربراہ جنرل سیسی کے ہاتھوں برطرف شدہ صدر پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ انہوں نے اپنے منصب کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے انتخابی مہم کے دوران 285 ملین ڈالر سے زائد کی خطیر رقم کا بے دریغ استعمال کیا۔

تحقیقاتی کمیٹی اس حوالے سے اگلے چند دنوں میں اپنی رپورٹ متعلقہ حکام اور اداروں کو پیش کر دے گی۔ بتایا گیا ہے کہ تحقیقات کرنے والی کمیٹی معزول صدر کی جائیداد کا بھی پتہ چلا رہی ہے، جبکہ بیگم مرسی اور ان کے بچوں کے نام پر امکانی اثاثہ جات اور بنک اکاونٹس کا بھی کھوج لگایا جا رہا ہے۔ ڈاکٹر محمد مرسی کے خلاف پراسیکیوٹر کی جانب سے تشدد پر ابھارنے اور جیل سے فرار ہونے کے مقدمات پہلے ہی بنائے جا چکے ہے۔

عبوری حکومت کے پراسیکیوٹر اس سے قبل اخوان المسلمون کے مرشد عام محمد بدیع اور مصر کی اہم کاروباری شخصیت و اخوان المسلمون کے نائب مرشد عام خیرت الشاطر سمیت 14 اہم رہنماوں کے اثاثہ جات منجمد کر چکے ہیں۔