.

مصری فوج نے سیناء میں طیارہ شکن میزائل برآمد کرلیے

دہشت گردی کی شکست تک کارروائی جاری رکھی جائے گی: فوجی ترجمان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کی مسلح افواج نے جزیرہ نما سیناء میں جاری بڑی کارروائی کے دوران طیارہ شکن میزائل برآمد کر لیے ہیں اور تین سو سے زیادہ مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

مصری فوج کے ترجمان احمد علی نے اتوار کو ایک نیوز کانفرنس میں بتایا ہے کہ سیناء میں ان خطرناک ہتھیاروں کو ایک کارروائی کے دوران پکڑا گیا ہے اور آرمی علاقے میں دہشت گردی کے خاتمے تک کارروائی جاری رکھے گی۔

انھوں نے کہا کہ ''مصر کی سلامتی سیناء میں ابتر صورت حال کی وجہ سے خطرے سے دوچار ہے اور اس علاقے میں ایک ترقیاتی منصوبے کے تحت سکیورٹی کو بحال کیا جائے گا''۔

فوجی ترجمان نے صحافیوں کو بتایا کہ ''مسلح افواج نے سیناء میں ذخیرہ شدہ ہتھیاروں کو پکڑا ہے اور تشدد کے حالیہ واقعات میں ملوث 309 افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔ ان کے علاوہ غزہ کی سرحد کے ساتھ ایک کنٹرول ٹاور کے نیچے سے دو دھماکا خیز ڈیوائسز بھی برآمد کی ہیں''۔

انھوں نے مزید بتایا کہ ''ہم نے فلسطینی تنظیم حماس کے زیر استعمال فوجی وردیاں بھی ضبط کی ہیں اور غزہ کی پٹی اور سیناء کے درمیان واقع سرحد پر 154 سرنگوں کو بھی تباہ کردیا ہے''۔ واضح رہے کہ ان سرنگوں کے ذریعے روز مرہ استعمال کی اشیاء کے علاوہ مبینہ طور پر اسلحہ بھی مصری علاقے سے غزہ منتقل کیا جاتا ہے۔

مصرکی مسلح افواج نے غزہ کی پٹی اور اسرائیل کی سرحد کے ساتھ واقع بدامنی کا شکار علاقے سیناء میں اسلامی جنگجوؤں کے خلاف دہشت گردی کے نام پر ایک بڑی کارروائی شروع کررکھی ہے۔ ان جنگجوؤں نے حالیہ ہفتوں کے دوران مصر کی سکیورٹی فورسز پر بم حملے کیے ہیں۔3 جولائی کو منتخب جمہوری صدر محمد مرسی کی مسلح افواج کے سربراہ جنرل عبدالفتاح السیسی کے ہاتھوں برطرفی کے بعد سے ان کی کارروائیوں میں شدت آئی ہے اور سیناء کے بعض علاقوں میں انھوں نے اپنے محفوظ ٹھکانے بنا رکھے ہیں۔