بشار الاسد کی وفادار عراقی شیعہ ملیشیا کا کمانڈر باغیوں کے ہاتھوں قتل

"ذوالفقار" بریگیڈ محاذ جنگ پرعراق کی واحد شام نواز تنظیم ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی میڈیا کے مطابق شام میں بشارالاسد کی حمایت میں لڑنے والے عراقی شیعہ ملیشیا "ذوالفقار" بریگیڈ کا ایک اہم کمانڈر فاضل صبحی دمشق کے قریب سیدہ زینب کالونی میں باغیوں کے حملے میں مارا گیا ہے۔

ایرانی قدامت پسندوں کے ترجمان نیوز ویب پورٹل "ٹرائبیون مستضعفون" کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ابو ھاجر فاضل صبحی کو سیدہ زینب کالونی میں باغیوں سے لڑتے ہوئے گذشتہ روز قتل کیا گیا۔

رپورٹ میں مقتول فاضل صبحی کی تنظیم "ذوالفقار بریگیڈ" کو شام میں باغیوں کے خلاف اور صدر بشارالاسد کے دفاع میں لڑنے والے عراقی شیعہ ملیشیا کا واحد گروپ قرار دیا گیا ہے۔ ابو ھاجر ذوالفقار گروپ کا ڈپٹی کمانڈر بتایا جاتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ذوالقفاربریگیڈ کےعلاوہ صدر بشارالاسد کی وفاداری میں غیر ملکی جنگجوؤں پر مشتمل ایک دوسری تنظیم" ابو الفضل عباس" بریگیڈ بھی شامل ہے لیکن اس میں غیرعراقی جنگجو شامل ہیں۔

ایران کی ایک دوسری ویب سائٹ "دکربان" کے مطابق "ابو الفضل عباس" اور "ذوالفقار بریگیڈ" پاسداران انقلاب کی بیرون ملک سرگرم تنظیم"القدس بریگیڈ" نے قائم کیے ہیں اور وہی ان کی سرپرستی بھی کر رہی ہے۔ ان دونوں تنظیموں میں ایرانی جنگجو بھی شامل ہیں جو صدر بشارالاسد کے دفاع میں لڑ رہے ہیں۔

فارسی ویب سائٹ "ابنا" نے ایک ماہ قبل ذوالفقار بریگیڈ کے کمانڈر ابو ھاجر فاضل صبحی کی تصاویر کے ساتھ اس کا مکمل تعارف شائع کیا تھا۔ رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ ابو ھاجر شام میں سلفی تکفیری دہشت گردوں کے خلاف 'جہاد' میں شریک ہیں۔ ابو ھاجر کے دورہ ایران کے دوران لیے گئے ایک انٹریو کے بھی کچھ اقتاباسات شامل کیے گئے تھے۔

ابو ہاجر نے تسلیم کیا تھا کہ انہوں نے عراقی شیعہ ملیشیا، شامی جنگجوؤں اور دوسرے غیر ملکی افراد پر مشتمل "ذوالفقار" اور "ابو الفضل عباس" بریگیڈ تشکیل دیے ہیں جو شام میں لڑنے والے القاعدہ گروپوں "النصرہ محاذ" اور "امارت اسلامیہ شام وعراق" کے خلاف شام کی سرزمین پر لڑ رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں