.

"اسکائی ڈائیو"،4000 میٹر کی اونچائی سے کودنے کی منفرد تفریح

کھجوروں کی سر زمین میں سب سے بڑا اسکائی ڈائیونگ کلب قائم ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے عالمی تجارتی اور سیاحتی مرکز دبئی فضاء سے پیرا شوٹ کے ذریعے چھلانگ لگانے کے تفریحی فن میں بھی خطے کے دوسرے ترقی یافتہ شہروں میں سبقت لےگیا ہے۔

کھجوروں کی سر زمین کے ساحل پر قائم "دبئی اسکائی ڈائیو" کلب اپنی نوعیت کا خطے کا سب سے بڑا کلب ہے جہاں پیراگلائیڈنگ کے شوقین سالانہ ساٹھ ہزار کی تعداد میں اس کلب کے ذریعے تربیت حاصل کرنے کے بعد فضاء سے چار ہزار میٹر کی بلندی سے چھلانگ لگانے کا اپنا شوق پورا کرتے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ہوائی جہاز کے ذریعے 4000 میٹر کی بلندی سے پیرا شوٹ کے ذریعے چھلانگ لگانے کا منظر نہایت دلفریب اور شائقین کے لیے زندگی کے یاد گار لمحات میں سے ایک ہوتا ہے۔ دبئی میں مقیم ایک اسکائی ڈائیور کترینہ کہتی ہیں"چار ہزار میٹر کی بلندی سے چھلانگ لگانے کا منظر بلا شبہ ایک حیرت انگیز تجربہ ہوتا ہے۔ جب میں نے کھجوروں کے جزیرے کے ساحل پر فضاء سے چھلانگ لگانے کا فیصلہ کیا تو یہ میرے لیے ایک انوکھا تجربہ تھا اورمجھے یقین نہیں آ رہا تھا کہ میں اتنی بلندی سے زمین کی طرف بڑھ رہی ہوں"۔

واضح رہے کہ "دبئی اسکائی ڈائیو کلب" شہرکے ساحل پر واقع خطے کا سب سے بڑا کلب ہے جو سالانہ ساٹھ ہزار غیر پیشہ ورانہ افراد کی تربیت کے بعد انہیں فضاء سے چھلانگ لگانے کا شوق پورا کرنے کا موقع فراہم کرتا ہے۔ کلب نے اس مقصد کے لیے چار ہوائی جہاز مختص کر رکھے ہیں جو نئے افراد کی تربیت اور پیراشوٹنگ کے لیے استعمال ہوتے ہیں۔

کلب کے ایکزیکٹو ڈائریکٹر محمد المازمی نے بتایا کہ یومیہ کم سے کم 60 سے 80 افراد کلب سے تربیت کے بعد فضاء سے پیرا شوٹ کے ذریعے چھلانگ لگانے کا تجربہ کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کلب سے مستفید ہونے والوں میں متحدہ عرب امارات کے علاوہ دوسرے ملکوں کے باشندے بھی آتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یورپ میں موسم کی خرابی کے باعث یورپین شہری بھی دبئی کلب سے اپنی اسکائی ڈائیونگ کا شو پورا کرتے ہیں۔ ٹریننگ سمیت ایک ٹرپ پرپانچ سو امریکی ڈالر خرچ ہوتے ہیں۔