.

مصر: فوج کی مدح میں رنگ ٹون پر خاتون کو نذرآتش کرنے کی کوشش

اخوان المسلمون کے حامی شخص نے اپنی ساتھی پر پٹرول انڈیل دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں ایک اسلام پسند شخص نے مبینہ طور پر اپنی ایک ساتھی کارکن کو فوج کی حمایت ومدح میں موبائل فون پر رنگ ٹون لگانے پر نذرآتش کرنے کی کوشش کی ہے۔

مقامی روزنامے الاہرام کے آن لائن ایڈیشن میں ہفتے کے روز شائع شدہ ایک رپورٹ کے مطابق یہ شخص مصری صدر محمد مرسی اور اخوان المسلمون کا حامی ہے۔

اخبار نے لکھا ہے کہ نذرآتش ہونے سے بچنیے والی تئیس سالہ لڑکی نے پولیس کو بتایا ہے کہ ''اس کے ساتھی نے موبائل فون پر رنگ ٹون سننے کے بعد اس کی توہین شروع کردی اور پھر پٹرول انڈیل کر اس کو نذرآتش کرنے کی کوشش کی''۔

مشتبہ شخص مبینہ طور پر ایک فارماسیوٹیکل کمپنی میں ملازم ہے اور اس کا مصری فوج کی تعریف پر مبنی رنگ ٹون پر اپنے ساتھی کارکنوں سے تندوتیز بحث مباحثہ ہوتا رہا ہے۔

واضح رہے کہ 3 جولائی کو مسلح افواج کے سربراہ جنرل عبدالفتاح السیسی کے ہاتھوں منتخب جمہوری صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی برطرفی کے بعد سے فوج کی تعریف میں موبائل رنگ ٹون اور ''تسلام الایدی'' کے نام سے گانا بہت مقبول ہوا ہے۔

اخوان المسلمون کے حامی فوجی سربراہ کے اقدام کے خلاف احتجاجی مظاہرے کررہے ہیں۔ تاہم مصری سکیورٹی فورسز کے 14 اگست کو قاہرہ میں خونریز کریک ڈاؤن کے بعد سے اخوان کے زیراہتمام ڈاکٹر مرسی کی برطرفی کے خلاف نکالی جانے والی ریلیوں اور احتجاجی مظاہروں کے شرکاء کی تعداد میں بتدریج کمی واقع ہوئی ہے۔