.

ایران میں 2000 کلومیٹر تک مار کرنے والے بیلسٹک میزائلوں کی نمائش

کسی کے خلاف جنگ میں پہل نہیں کریں گے: حسن روحانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسلامی جمہوریہ ایران نے اپنی دفاعی طاقت کی ایک جھلک دکھانے کے لیے بیلسٹک میزائلوں کی ایک نمائش کا اہتمام کیا ہے۔ اتوار کے روز ہونے والی اس نمائش میں 2000 کلومیٹر فاصلے تک مار کرنے والے "سجیل" اور "قدر" بیلسٹک میزائل دکھائے گئے۔ نمائش کے ذریعے تہران نے پہ پیغام دیا ہے کہ اس کے پاس نہ صرف اسرائیل کے تمام شہروں تک مار کرنے والے میزائیل موجود ہیں بلکہ یہ میزائل خطے میں تمام امریکی فوجی اڈوں کو بھی با آسانی نشانہ بنا سکتے ہیں۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی "اے ایف پی" کے مطابق تہران کے جنوب میں منعقد کی گئی نمائش میں "سجیل" برانڈ کے 12 جبکہ "قدر" کے نام سے موسوم 18 بیلسٹک میزائل ڈسپلے کیے گئے۔ خیال رہے کہ ایران نے دور مار اسلحے کی یہ نمائش ایک ایسے وقت میں کی ہے جب شام میں صدر بشارالاسد کی عوام دشمن پالیسیوں کے باعث خطے میں جنگ کے بادل منڈلا رہے ہیں۔ ایران، صدر بشارالاسد کی حمایت کرتے ہوئے عالمی طاقتوں کو کسی فوجی کارروائی کے سنگین نتائج پر خبردار کر چکا ہے۔

مبصرین کا خیال ہے کہ ایران اسی ممکنہ جنگ کے پیش نظر شام دشمن ممالک پراپنی طاقت ظاہرکرنا چاہتا ہے۔ نمائش سے خطاب کرتے ہوئے ایرانی صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے کہا کہ "حالیہ دو سو سال کے دوران ان کے ملک نے کسی دوسرے ملک پر حملہ نہیں کیا ہے۔ اسلامی جمہوریہ ایران اب بھی کسی کے خلاف جنگ میں پہل نہیں کرے گا، لیکن جنگ مسلط کی گئی تو دشمن کو دانت شکن جواب دینے میں کوئی کسر بھی نہیں چھوڑی جائے گی."

یاد رہے کہ ایران نے"سجیل" بیلسٹک میزائل کا پہلا کامیاب تجربہ نومبر2008 میں کیا تھا، جس کے ایک سال بعد 2009ء میں "قدر" بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا گیا۔ یہ دونوں میزائل دو ہزار کلومیٹر تک زمین سے زمین پر مار کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ دونوں میزائلوں کو چلانے کے لیے ٹھوس ایندھن استعمال کیا جاتا ہے۔