.

اقوام متحدہ کی قرارداد ہماری تمناوں کا اظہار ہے: بشارالاسد

کیمائی ہتھیاروں کے خلاف معاہدے کا پہلے ہی حصہ بن چکے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے صدر بشار الاسد نے کہا ہے کہ ان کا ملک کیمیائی ہتھیاروں سے متعلق اقوام متحدہ کی قرار داد کا احترام کرتا ہے اور اس پر عمل کرے گا، ۔بشارالاسد نے یہ بات ایک انٹرویو میں کہی ہے۔

شامی صدر کا کہنا تھا '' ہم کیمیائی ہتھیار رکھنے اور استعمال کرنے کے خلاف بین الاقوامی معاہدے میں اقوام متحدہ کی قرارداد آنے سے پہلے ہی شامل ہو چکے ہیں۔''

ایک سوال کے جواب میں بشارالاسد کا کہنا تھا '' مجھے اس معاہدے پر مجبور نہیں کیا گیا ہے بلکہ یہ میری اپنی مرضی کے مطابق ہوا ہے۔'' ان کا کہنا تھا اس قرارداد کا مرکزی حصہ وہی ہے جو ہم چاہتے تھے۔ اس لیے یہ اقوام متحدہ کی قرارداد نہیں ہماری اپنی تمنا ہے۔''

واضح رہے جمعہ کے روز اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے شام کے کیمیائی ہتھیاروں کے خلاف ایک قرارداد منظور کی تھی۔ اس سے پہلے گزشتہ ماہ امریکا شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال پر شام میں فوجی کارروائی کرنا چاہتا تھا، جبکہ شام کے اتحادی روس اور دیگر ممالک کا موقف تھا کہ کیمیائی ہتھیار شامی باغیوں نے استعمال کیے ہیں۔