.

ایران اپنے جوہری پروگرام کے حوالے سے تجاویز سامنے لائے: کیری

گیند ایرانی کورٹ میں ہے، ایران ثابت کرے اسکا پروگرام پر امن ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے ایران سے کہا ہے کہ متنازعہ جوہری پروگرام کے حوالے سے نئی تجاویز سامنے لائے۔ اس حوالے سے گیند ایرانی کورٹ میں ہے۔ جان کیری نے یہ بات پیر کے روز کہی ہے۔

اس سے پہلے ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے اتوار کے روز کہا تھا کہ سلامتی کونسل کے پانچ مستقل ارکان سمیت چھ بڑی طاقتوں نے ایران کے نئے اعتدال پسند صدر حسن روحانی کے انتخاب سے پہلے جون 2013 میں قازقستان اجلاس میں جو تجاویز پیش کی تھیں وہ اب کار آمد نہیں رہی ہیں۔

امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے حالیہ دنوں میں سفارتی سطح پر ہونے والی پیش رفت کا خیر مقدم کیا تاہم واضح کیا کہ گیند اب ایران کے کورٹ میں ہے ۔

جان کیری نے چھ اہم ملکوں کی جانب سے الماتے میں پیش کی گئی تجاویز کے حوالے سے کہا وہ نہیں سمجھتے کہ ایران نے سابقہ تجاویز کا پوری طرح جواب دیا تھا۔ انہوں نے مزید کہا '' ہم انتظار کر رہے ہیں کہ ایران کو ماضی سے مختلف اپروچ کو پوری طرح سامنے لانا چاہیے۔''

امریکی وزیر خارجہ نے ایک سوال کے جواب میں وضاحت کرتے ہوئے کہا'' ہم یہ چاہتے ہیں کہ تجاویز ایران کی طرف سے آئیں جن میں بتایا جائے کہ ایران کا جوہری پروگرام مکمل طور پر پر امن ہے۔''

واضح رہے جون 2013 سے پہلے چھ اہم ملکوں نے ایران سے یورینیم کی افزودگی روک کر اسے بیس فیصد تک لانے، نیز قم کے قریب قائم یورینیم کی افزودگی کے زیر زمین پلانٹ کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔