.

سعودی حکام نے دس جعلی حج مہمات کو روک لیا

حج پرمٹ سے محروم حجاج کے خلاف سخت اقدامات کی تیاری مکمل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی حکام نے حالیہ دنوں میں حاجیوں کو سہولیات فراہم کرنے کا دعویٰ کرنے والی دس جعلی مہمات چلانے والوں کو پکڑ لیا ہے۔

مکہ کے گورنر کے دفتر کے ذمہ دار افسر اور حج آپریشنز کی ایگزیکیٹو کمیٹی کے سربراہ عبدالعزیز الخضری نے'' العربیہ '' کو بتایا ہے کہ ان جعلی مہمات کے بارے میں عوام کو جلد ہی آگاہ ک ردیا جائے گا اور ان کے ذمہ داران کو کڑی سزا کا سامنا کرنا پڑے گا۔

الخضری نے بتایا کہ ان مہمات کے بارے میں سعودی عرب کے اندر ہی پتہ چلا تھا۔ سعودی عہدیدار کے مطابق جعلی حج آپریٹرز ایک بہت بڑا مسئلہ ہیں جو کہ حاجیوں کو بہتر سہولیات فراہم کرنے کے لئے کوشاں سعودی حکام کی راہ میں رکاوٹ میں بنتے ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا کہ سعودی عرب کے باہر سے آنے والے حاجی بہت منظم ہیں اور ملک کے باہر کوئی جعلی مہم نہیں پائی گئی ہے۔ دوران حج پیش آنے والی دوسری مشکلات کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے ٹرانسپورٹ اور لوگوں کی بھیڑ کا ذکر کیا جو کہ غیر منظم حاجیوں کی وجہ سے پیش آتی ہے کیونکہ ایسے حاجی کسی باضابطہ حج مہم کا حصہ نہیں ہوتے ہیں۔ اس لیے انہیں نہ صرف خود ایک مقدس مقام سے دوسری جگہ جانے میں شدید مشکل کا سامنا کرنا پڑتا ہے بلکہ دوسرے حاجیوں کے لیے بھی مسائل کا موجب بنتے ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پچھلے ماہ جدہ پولیس نے تین جعلی حج مہمات کا پردہ فاش کیا تھا جو کہ پانچ عرب اور ایشیائی غیر ملکی تارکین متعدد سعودی باشندوں کے ساتھ ملکر چلا رہے تھے۔

دریں اثناء سعودی سول ڈیفنس حکام نے حج سروس فراہم کرنے والوں کو خبردار کیا ہے کہ اگر انہوں نے حج کے دوران حفاظتی ہدایات کی خلاف ورزی کی تو انہیں سخت کارروائی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ اس کے علاوہ 70 سیکیورٹی ٹیمیں بھی دوران حج گشت پر مامور ہوں گی جو کہ حج پرمٹ کے بغیر مکہ یا مقدس مقامات میں داخل ہونے کی کوشش کرنے والوں کو پکڑیں گے۔

حج سیکیورٹی کمانڈ کے عہدیداروں نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا ہے کہ یہ غیر قانونی حجاج متعلقہ ایجنسیوں کے حوالے کئے جائیں گے تاکہ وہ ان کے خلاف قانونی کارروائی کر سکیں۔ اس سے پہلے حکام نے کہا تھا کہ حج پرمٹ کے بغیر حج ادا کرنے والوں کو فوری طور پر'' ڈی پورٹ ''کر دیا جائے گا اور ان کے سعودی عرب میں داخلے پر 10 سال کے لئے پابندی عائد کر دی جائے گی۔

اسی طرح غیر قانونی حجاج کو مقدس مقامات تک پہنچانے والی گاڑیوں کے مالکان کو بھی حراست میں لے لیا جائے گا اور جرمانے کا سامنا کرنا پڑے گا اور ان کی گاڑیوں کو تحویل میں لے لیا جائے گا۔