بشارالاسد سیاستدان نہیں دہشت گرد ہے: طیب ایردوآن

ایک لاکھ سے زائد افراد کے قاتل کی تعریف نہیں کر سکتا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترک وزیراعظم رجب طیب ایردوآن نے شام کے صدر بشار الاسد کو دہشت گرد قرار دیتے ہوئے کہا بشار الاسد ایک لاکھ دس ہزار افراد کے قتل میں ملوث ہیں وہ سیاستدان نہیں ہیں کیونکہ انہوں نے عوام کے خلاف ریاستی دہشت گردی کا ارتکاب کیا ہے۔''

طیب ایردوآن نے انقرہ میں بھارتی صدر پرناب مکھرجی کے ساتھ ملاقات کے بعد ایک ترک اخبار حریت سے بات کرتے ہوئے کہا '' میں بشارالاسد کو ایک سیاستدان سمجھتا ہوں نہ اس ناطے ان کا احترام کرتا ہوں، کہ ایک شخص جس نے ایک لاکھ دس ہزار افراد کو قتل کیا ہو وہ سیاستدان نہیں دہشت گرد ہی ہو سکتا ہے۔''

ترک وزیر اعظم کے یہ خیالات بشار الاسد کی اس دھمکی کے بعد سامنے آئے ہیں کہ '' ترکی کو شامی باغیوں کو مدد دینے کی قیمت چکانا پڑے گی۔''

بشارالاسد نے ایک جرمن اخبار کو دیے گئے انٹرویو میں کہا تھا '' جلد دہشت گردوں کو مدد دینے کے مضمرات ترکی کے لیے سامنے ہوں گے۔''

بشارالاسد نے اپنے اس انٹرویو میں طیب ایردوآن کے خلاف سخت زبان استعمال کی تھی اور کہا تھا'' ایردوآن جھوٹے اوردہشت گردوں کے مدد گار ہیں۔''

ادھر طیب ایردوآن نے اس سوال پر کہ ''جان کیری نے شام میں کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے آغاز پر مثبت تبصرہ کیا ہے '' پر کہا'' آپ اور میں انسان ہیں، ہم کیسے ایک ایسے شخص کی تعریف کریں جس نے ایک لاکھ سے زائد شہریوں کی جان لی ہو۔''

انہوں نے کہا ''ہتھیار کیمائی ہوں یا دوسرے دونوں کا نتیجہ موت ہے، میں سوچ بھی نہیں سکتا کہ کوئی بشار الاسد کی تعریف کر سکتا ہے، اس لیے میرا نہیں خیال کہ جان کیری نے اس کی تعریف کی ہو گی یا کوئی ایسا بیان دیا ہو گا۔''

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں