عراق میں مربوط سلسلہ وار بم دھماکے، 72 ہلاک 109 زخمی

ملک میں فرقہ وارنہ فسادات میں تیزی سے اضافہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عراق کے دارالحکومت بغداد میں پیر کے روز سلسلہ وار کار اور سڑک کنارے بموں کے مربوط حملوں میں آٹھ سیکیورٹی اہلکار سمیت 72 افراد ہلاک اور 109 زخمی ہو گئے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق بغداد اور اس کے ارگرد آٹھ علاقوں میں آٹھ کار بم اور دو سڑک کنارے بم دھماکوں میں 72 افراد ہلاک اور 109 زخمی ہوئے ہیں۔ ایک دوسرے حملے میں سیکیورٹی فورسز کے آٹھ افراد ہلاک ہوئے۔

یاد رہے ہفتہ کے روز بغداد میں دو خود کش حملے ہوئے تھے، ایک خود کش حملہ شیعہ زائرین پر ہوا تھا جس میں ایک حملہ آور نے زائرین کے درمیان اپنے آپ کو دھماکے سے اڑا دیا تھا جس کے نتیجے میں چودہ افراد ہلاک ہو گئے تھی جبکہ دوسرا حملہ دارالحکومت کے شمال میں واقع کیفے کے اندر ایک خود کش حملہ آور نے خود کو دھماکا خیز مواد سے اڑا دیا تھا۔

پیر کے روز بغداد کے جنوب میں ایک گارڈ نے ایک عورت کو ایک اسکول کے قریب بم نصب کرتے ہوئے پکڑ لیا۔ وزیر داخلہ نے بتایا کہ ایک عورت میدان میں ایک اسکول کی دیوار کے قریب بم نصب کرنے کی کوشش کر رہی تھی لیکن اسکول گارڈ نے اسے رنگے ہاتھوں پکڑ لیا انہوں نے اپنے دوسرے ساتھی گارڈ کی مدد سے عورت کو فوج کے حوالے کر دیا۔

وزیر اعلٰی نوری الملکی نے پیر کے روز کہا ہے کہ "کیا عراق کو اجاگر کیا جا رہا ہے یہ ایک بہت بڑی سازش ہے جس کا مقصد ایک معاشرے کے بیٹوں کے درمیان ہنگامہ آرائی اور فرقہ واریت پیدا کرنا ہے"۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ شام کی خانہ جنگی کو عراق منتقل کرنے کا ایک منصوبہ ہے

عراق مزید فرقہ وارانہ فسادات کی جانب بڑھ رہا ہے جس طرح ماضی میں 2006 اور 2007 کے دوران فرقہ وارانہ فسادات ہوئے تھے۔ جس میں ہزاروں افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

سفارت کاروں کے مطابق شیعہ قیادت والی حکومت عراق کی سنی عرب اقلیت کی شکایات کو حل کرنے میں ناکام ہے جنھیں سیاسی سرگرمیوں پر پابندی اور سیکورٹی فورسز کی طرف سے خلاف ورزیوں کی شکایت ہے جو ان کی بے چینی میں اضافے کا سبب ہے۔

اس سال اپریل 23 کو شمالی عراق میں ایک سنی عرب حکومت مخالف احتجاجی کیمپ پر سیکورٹی فورسز کی دخل اندازی کے بعد تشدد پھوٹ پڑے تھے۔ ان جھڑپوں میں درجنوں افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

سیکیورٹی اور طبی ذرائع کی بنیاد پر خبر رساں ادارے اے ایف پی کے اعداد و شمار کے مطابق تازہ تشدد کے واقعات میں اس ماہ میں اب تک 200 افراد ہلاک ہو چکے ہیں، جبکہ اس سال کے آغاز سے اب تک ہلاک ہونے والوں کے تعداد 4,900 تک پہنچ چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں