.

دمشق: سرکاری ٹی وی سٹیشن کے قریب دو کار دھماکے

کیمیائی معائنہ کاروں کی جائے قیام بھی دھماکوں کی جگہ سے متصل ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے دارالحکومت دمشق میں سرکاری ٹی وی کے مرکزی دفاتر کے قریب دو کار بم دھماکے ہوئے ہیں۔ عینی شاہدین کے مطابق جائے دھماکہ پر انسانی جسم کے پرخچے تھے اور آس پاس آگ کے شعلے بھڑک رہے تھے۔

واضح رہے دمشق کا یہ وہی مرکزی علاقہ ہے جہاں کیمیائی ہتھیاروں کے جائزے اور تلفی کے لیے عالمی معائنہ کار ایک ہوٹل میں ٹھرے ہوئے ہیں۔ اس علاقے میں حالیہ چند دنوں میں مسلسل کارروائیناں جاری ہیں تاہم ان کا ہدف بظاہر معائنہ کار نہیں ہیں۔ دوراز قبل مارٹر گولوں سے دو حملے کیے گئے تھے۔

شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق ان دھماکوں دمشق کے اماید سکوائر کی عمارت کو نقصان پہنچا ہے۔ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب دو دہشت گرد جو کہ مبینہ طور پر خود کش بمبار تھے گاڑیاں چلاتے ہوئے آئے اور انہوں نے اماید سکوائر کے داخلی راستے پر ہی کاروں سمیت خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔

دھماکوں کے فوری بعد فائر بریگیڈ کے اہلکاروں نے عمارت میں لگی آگ بجھانا شروع کر دی تھی۔ اتوار کی رات ہونے والے ان کار بم دھماکے ان کارروائیوں کا حصہ ہیں جو عالمی معائنہ کاروں کی جائے قیام کے گردو پیش میں حالیہ دنوں میں کی جا رہی ہیں۔

اس سے پہلے ہی اقوام متحدہ کے سیکرٹری بان کی مون کہہ چکے ہیں شام میں کیمیائی معائنہ کاروں کا مشن خطرات کا حامل ہے۔ واضح رہے ان معائنہ کاروں کو شام کے طول و عرض میں 45 مختلف جگہوں پر اپنا ہدف مکمل کرنا ہے ۔