.

شامی فوج کے 16 اہکار ہلاک، ایک باغی گرفتار

جہادی گروپ النصرہ کیطرف سے کار بم دھماکے کے بعد سخت تصادم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے دارالحکومت میں ہفتے کے روز کار بم دھماکے اور اس کے بعد شامی فوج اور اسلام پسند باغیوں کے درمیان شروع ہونے والے تصادم کے باعث کم از کم 16 شامی فوجی ہلاک ہو گئے ہیں۔

شام میں تشدد کے واقعات کو دیکھنے والے ایک گروپ کے مطابق النصرہ نامی جہادی گروپ کی جانب سے بم دھماکے کیے گئے۔ یہ گروپ بشار رجیم کیخلاف سر گرم عمل ہے۔ اس دھماکے کے بعد مرکزی چیک پوسٹ اور ملیحہ کے درمیانی علاقوں میں سخت جھڑپوں کی اطلاعات ملی ہیں ۔ اس دوران ایک باغی کو قصبے سے گرفتار بھی کر لیا گیا ہے۔

اس باغی کو ایک ایسے علاقے سے گرفتار کیا گیا ہے جو عیسائی آبادی کی اکثریت کا علاقہ اور بشار رجیم کا حامی سمجھا جاتا ہے۔ واضح رہے بشار رجیم کے حامی اکثر علاقوں میں عیسائیوں کی اکثریت رہتی ہے ۔