قطر فلسطینی اتھارٹی کو 150ملین ڈالر امداد دے گا

غزہ محاصرے سے لاکھوں انسان مشکلات سے دوچار ہیں: خالد العطیہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی وزیر خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ قطر نے فلسطینی اتھارٹی کو 150 ملین ڈالر کی امداد فراہم کرنے کی حامی بھر لی ہے۔ اس امر کا اظہار کرتے ہوئے جان کیری نے قطر حکومت کے فراخدلانہ امداد کا خیر مقدم کرتے ہوئے اسے اسرائیل فلسطین امن مذاکرات کی بحالی کے حوالے سے ایک اہم پیش رفت قرار دیا ہے۔

امریکی وزیرِ خارجہ جان کیری نے پیرس میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا فلسطینی ریاست کیلئے اس مشکل گھڑی میں آسانیاں پیدا کرنے کیلئے قطرکی طرح بعض مشرقِ وسطیٰ کے دوسرے ممالک بھی فلسطینی عوام کے ساتھ کھڑے ہونگے۔

اس موقع پر قطر کے وزیرِ خارجہ خالد العطیہ نے غزہ کے مسلسل محاصرے اور یہودی بستیوں میں دن بدن اضافے پر تشویش ظاہر کی۔ ان کا کہنا تھا ''عرب لیگ چاہتی ہے کہ مذاکراتی عمل کیلئے ماحول سازگار رہے۔'' انہوں نے عالمی خبررساں ادارے کو بتایا کہ انکی حکومت نےغزہ کو اسرائیلی دبائو اور دخل اندازی سے دور رکھنے کیلئے بات کر چکی ہے۔

قطری وزیرِ خارجہ نے کہا کہ اس وقت غزہ میں لاکھوں لوگ بستے ہیں اور انہیں خوراک اور ادویات کی اشد ضرورت ہے۔ تمام فریقوں کیلئے سرحدی راستے کھولنے کا کوئی طریقہ ضرور ہونا چاہیے۔ ایسا کرنا غزہ کے عوام کی پر سکون زندگی کیلئے ضروری ہے۔"

جان کیری نے اپنے قطری ہم منصب کے ساتھ کی گئی مشترکہ پریس کانفرنس میں بتایا کہ اسرائیل اور فلسطین کے مذاکرات کاروں کے درمیان کل 13 ملاقاتیں طے پائی ہیں۔ اب تک اسرائیلی اور فلسطینی مذاکرات کار تین مرتبہ ملاقات کر چکے ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا " مذاکراتی عمل کی رفتار میں اضافہ ہوا ہے ۔"

یاد رہے کہ ستمبر 2010ء میں مذاکراتی عمل میں خلل پیدا ہونے کے بعد دوبارہ سے بحال کرنے کیلئے امریکی وزیرِ خارجہ جان کیری نے بہت محنت کی ہے۔

تین سال کے طویل وقفے کے بعد اس سال جولائی کے اواخر میں دونوں اطراف کے درمیان مذاکراتی عمل کا دوبارہ آغاز واشنگٹن میں ہوا۔
کیری نے مزید کہا کہ فلسطینی و اسرائیلی قائدین اچھی طرح جانتے ہیں کہ داو پر کیا لگا ہوا ہے۔ اپنے معاملات کے حل کی تلاش کیلئے دونوں اطراف نے کافی خطرات مول لئے ہیں۔

اس ہفتے کے آخر میں اسرائیلی وزیرِ اعظم بنجمن نتن یاہو وزیرِ خارجہ کیری کے ساتھ روم میں ملاقات کریں گے جہاں مذاکراتی عمل کے متعلق تبادلہ خیال کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں