.

یمن میں زندہ جلائی جانیوالی لڑکی کے حوالے سے والد پر شبہ

پندرہ سالہ مقتولہ نے شادی سے پہلے منگیتر سے ملاقات کی تھی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں مبینہ طور پر شادی سے پہلے اپنے منگیتر سے ملاقات کرنے والی پندرہ سالہ لڑکی کو ز ندہ جلا دینے کے واقعہ میں پولیس کی طرف سے لڑکی کے والد پر قتل کا شبہ کیا جا رہا ہے۔

پولیس کے مطابق اب تک سب سے زیادہ شبہ والد پر ہونے کے شواہد سامنے آئے ہیں۔ تاہم دیگر پہلووں کو بھی دیکھا جارہا ہے۔ قتل کا یہ واقعہ یمن کے جنوبی صوبے کے ایک گاوں میں پیش آیا ہے۔ پراسیکیوٹرز نے الزام لڑکی کے 35 سالہ باپ پر عاید کیا ہے۔

یمن میں غیرت کے نام پو خواتین کے قتل کے واقعات عام طور پر ہوتے رہتے ہیں۔ اس سلسلے میں اقوام متحدہ کی طرف سے یمن کو کافی دباو کا سامنا بھی رہتا ہے۔ لیکن قبائلی پس منظر کے حامل صحرائی علاقوں کے باسی اپنی روایات کو زیادہ اہمیت دیتے ہیں۔