شام:یرغمال بازیابی معاہدے کے تحت مزید 61 خواتین کی رہائی

شامی حکومت نے معروف بلاگر طل الملوحی کو بھی ساڑھے تین سال کے بعد رہا کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شامی حکومت نے یرغمالیوں کی رہائی کے لیے طے پائے معاہدے کے تحت معروف بلاگر طل الملوحی سمیت مزید اکٹھ خواتین کو رہا کردیا ہے۔

قطر اور ترکی کی ثالثی میں قیدیوں اور یرغمالیوں کی رہائی کے لیے طے پائے سہ فریقی معاہدے کے تحت گذشتہ دوروز میں شامی صدر بشارالاسد کی حکومت نے اکسٹھ خواتین کو حراستی مرکز اور جیلوں سے رہا کیا ہے۔

برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق کی اطلاع کے مطابق اس ڈیل کے تحت باغی جنگجوؤں نے لبنان سے تعلق رکھنے والے نو شیعہ زائرین کو اسی ہفتے رہا کیا ہے اور ان کے بدلے میں لبنان میں ایک شیعہ گروپ نے دو ترک پائِلٹوں کو رہا کردیا تھا۔

شام کی ایک عدالت نے طل الملوحی کو معافی دے دی تھی۔اس نوعمر بلاگر کو حکومت کے خلاف تنقید کی پاداش میں شام میں صدر بشارالاسد کے خلاف فروری 2011ء میں عوامی مزاحمتی تحریک کے آغاز سے قریباً ایک سال قبل گرفتار کیا گیا تھا۔

لبنان ،شام ،ترکی اور قطر کے علاوہ فلسطینی اتھارٹی بھی اس ڈیل کا حصہ تھی۔اس میں شامی حکومت سے مطالبہ کیا گیا تھا کہ وہ حزب اختلاف کے مطالبات کو پورا کرنے کے لیے کم سے کم دو سو خواتین کو جیلوں سے رہا کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں