.

مصر:رات کو نافذ کرفیو کے دورانیے میں کمی

ہفتے کے 6 دن 4 گھنٹے اور جمعہ کو 10 گھنٹے تک کرفیو برقرار رہے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری کابینہ نے ملک میں گذشتہ دوماہ سے نافذ رات کے کرفیو کے وقت میں کمی کردی ہے۔

کابینہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اب رات کے وقت ایک بجے سے صبح پانچ بجے تک چارگھنٹے کے لیے کرفیو نافذ ہوگا اور جمعہ کی رات دس گھنٹے تک کرفیو برقرار رہے گا اور یہ شام سات بجے سے شروع ہو گا۔

واضح رہے کہ جمعہ مصر میں اختتام ہفتہ کا آغاز ہے اور ؁ 2011ء کے بعد سے دارالحکومت قاہرہ اور دوسرے شہروں میں جمعہ ہی کو انقلاب نواز اور حکومت کے مخالفین بڑے مظاہرے کرتے رہے ہیں۔گذشتہ دو ڈھائی ماہ کے دوران برطرف صدر محمد مرسی کے حامی جمعہ کے روز حکومت کے خلاف احتجاجی ریلیاں نکالتے رہے ہیں۔

اگست کے وسط میں ان احتجاجی مظاہروں کے دوران اخوان کے کارکنان کی حکومت کے حامیوں اور سکیورٹی فورسز کے ساتھ مسلح جھڑپوں کے بعد عبوری حکومت نے قاہرہ اور دوسرے شہروں میں کرفیو نافذ کردیا تھا اور اس کے ساتھ ملک بھر میں ہنگامی حالت بھی نافذ کردی تھی۔

عبوری حکومت کے اس اقدام کے بعد مصری سکیورٹی فورسز نے قاہرہ میں برطرف صدر محمد مرسی کے حامیوں کے دو دھرنوں کے خلاف کریک ڈاؤن کارروائی کی تھی جس میں کم سے کم دو ہزار مظاہرین مارے گئے تھے۔اس خونریز کریک ڈاؤن کے ردعمل میں سکیورٹی فورسز اور گرجا گھروں پر حملوں کا ایک سلسلہ شروع ہوگیا تھا جن میں اب تک سیکڑوں افراد مارے جاچکے ہیں۔

گذشتہ اتوار کو قاہرہ کے علاقے وراق میں موٹر سائیکل پر سوار مسلح نقاب پوشوں نے قبطی عیسائیوں کے ایک گرجا گھر میں منعقدہ شادی کی تقریب پر اندھا دھند فائرنگ کردی تھی۔اس واقعے میں چار مسیحی ہلاک اوراٹھارہ افراد زخمی ہوگئے تھے۔ان میں سے ایک شدید زخمی مسلم مرد جمعرات کو چل بسا ہے۔

برطرف صدر محمد مرسی کے حامی گروپوں پر مشتمل اتحاد نے آج جمعہ کو بھی حکومت کے خلاف نئے مظاہروں کی اپیل کی ہے۔اس موقع پر سکیورٹی فورسز اور مظاہرین کے درمیان تصادم کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔اخوان المسلمون کی قیادت میں حزب اختلاف کے اس نئے اتحاد نے 4 نومبر کو ڈاکٹر محمد مرسی کی عدالت میں پہلی پیشی تک احتجاجی مظاہرے جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔یہ اتحاد برطرف صدر کے خلاف بے بنیاد الزامات پرمقدمہ چلانے کی مذمت کررہا ہے۔