شام نے کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کا منصوبہ بروقت پیش کردیا

شامی اعلامیے یا تلفی کے منصوبے کی کوئی تفصیل جاری نہیں کی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ہیگ میں قائم کیمیائی ہتھیاروں کے امتناع کی تنظیم (او پی سی ڈبلیو) نے اس امر کی تصدیق کردی ہے کہ شام نے اپنے کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے لیے منصوبہ بروقت جمع کرادیا ہے۔

دنیا میں کیمیائی ہتھیاروں کی موجودگی پرنظر رکھنے والے ادارے نے اتوار کو جاری کردہ ایک بیان میں بتایا ہے کہ شام نے زہریلی گیس اوراعصاب شکن ایجنٹ کے ذخیرے اور ان کی تمام جگہوں کی تلفی سے متعلق تفصیل گذشتہ جمعرات کو پیش کر دی تھی۔

شام نے 2014ء کے وسط تک اپنے تمام کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے لیے وضع کردہ نظام الاوقات کے مطابق 27 اکتوبر تک یہ تمام تفصیل بھیجنا تھی لیکن اس نے اس سے تین روز قبل ہی 24 اکتوبر کو اپنے کیمیائی ہتھیاروں سے متعلق پروگرام کا تفصیلی اعلامیہ پیش کردیا ہے۔

تنظیم کا کہنا ہے کہ رکن ممالک کی جانب سے پیش کردہ اعلامیوں کی بنیاد پر ہی کیمیائی ہتھیاروں کو ٹھکانے لگانے اور ان کی تیاری کی جگہوں کی تباہی کے لیے منصوبے وضع کیے جاتے ہیں۔تاہم تنظیم نے شام کے اعلامیے یا کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے منصوبے کے بارے میں کوئی تفصیل جاری نہیں کی۔

شام اس سے قبل اپنے کیمیائی ہتھیاروں سے متعلق ابتدائی تفصیل سے او پی سی ڈبلیو کو آگاہ کرچکا ہے اور اس عالمی ادارے کے معائنہ کار شام کی اعلان کردہ تیئس جگہوں کے معائنے کرچکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں