مصر کی سلامتی کے لیے خلیج کا استحکام اہم ہے: وزیراعظم ببلاوی

قاہرہ چھوٹے کاروباروں سے متعلق یو اے ای کے تجربات سے استفادہ کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے عبوری وزیراعظم حازم الببلاوی نے خلیجی ریاستوں کی سکیورٹی کی خلاف ورزیوں کا ناتا اپنے ملک کی قومی سلامتی سے جوڑا ہے اور کہا ہے کہ مصر کی قومی سلامتی کے لیے خلیج کے خطے میں استحکام اہمیت کا حامل ہے۔

انھوں نے یہ بیان اتوار کو متحدہ عرب امارات کے دورے کے دوسرے روز جاری کیا ہے۔انھوں نے کہا کہ مصر چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباروں اور صنعتوں سے متعلق یو اے ای کے تجربات سے استفادہ کرے گا اور دونوں ممالک دوطرفہ تعاون کے فروغ سے متعلق مواقع سے فائدہ اٹھائیں گے۔

مصری وزیراعظم نے کہا کہ ''یو اے ای کے ساتھ ہمارے تعلقات دونوں حکومتوں تک محدود نہیں ہیں بلکہ اس میں نجی شعبے کو بھی شامل کیا جائے گا''۔ان کا کہنا تھا کہ متحدہ عرب امارات مصر میں سرمایہ کاری کرنے والا دوسرا بڑا ملک ہے اور ہم سرمایہ کاروں کو درپیش رکاوٹوں کو دور کرنے کے لیے اقدامات کو تیار ہیں۔

گذشتہ روز انھوں نے متحدہ عرب امارات کے ساتھ نئے قرضوں ،ایندھن کے حصول اور دوسری امداد سے متعلق ایک ارب نوے کروڑ ڈالرز مالیت کے معاہدے پر دستخط کیے تھے۔

واضح رہے کہ 3 جولائی کو مسلح افواج کے سربراہ جنرل عبدالفتاح السیسی کے ہاتھوں اخوان المسلمون سے تعلق رکھنے والے منتخب جمہوری صدر محمد مرسی کی برطرفی کے بعد یو اے ای نے مصر کو تین ارب ڈالرز کی امداد دینے کا وعدہ کیا تھا اور یہ امداد خلیجی ممالک کی جانب سے معاشی بحران کا شکار مصر کے لیے اعلان کردہ بارہ ارب ڈالرز کے پیکج کا حصہ تھی۔

ببلاوی نے اپنے بیان میں محمد مرسی کی قیادت میں اخوان المسلمون کے مختصر دور حکومت پر تنقید کی ہے اور کہا ہے کہ اس سے خود ملک تباہ ہوا اور اس کا تشخص داغدار ہوا ہے۔

یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کی رپورٹ کے مطابق مصر کے ساتھ طے پائے نئے معاہدے میں اس ملک کے لیے امداد کا فریم ورک وضع کیا گیا ہے اور اس سے مزید امداد کے دروازے کھل سکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں