.

ایران میں امریکا مخالف چاکنگ مٹانے کا عمل شروع

واشنگٹن سے تعلقات بہتر بنانے کی مساعی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے مرکزی شہر تہران کی ضلعی حکومت نے دارالحکومت کی شاہراؤں اور بعض دیگر اہم مقامات پر نقش امریکا مخالف نعرے اور چاکنگ مٹانے کے احکامات دیے ہیں۔ یہ کارروائی ایک ایسے وقت میں شروع کی گئی ہے جب تہران سفارتی میدان میں واشنگٹن کے ساتھ اپنے تعلقات بہتر بنانے کی مساعی بھی جاری رکھے ہوئے ہے۔ اس کے جواب میں امریکا نے بھی ایران کے جوہری پروگرام کے بارے میں دباؤ میں قدرے کمی کی ہے۔

ایرانی خبر رساں ایجنسی "فارس" کی رپورٹ کے مطابق تہران میونسپل کمیٹی کے ایک عہدیدار نے کہا ہے کہ شہرمیں بعض مقامات پر کی گئی وال چاکنگ میں خلاف قانون نعرے بازی کی گئی ہے جسے صاف کرنے کا حکم دیاگیا ہے۔

تہران بلدیہ کے ترجمان ھادی ایازی نے بتایا کہ "بعض ثقافتی تنظیموں نے بلدیہ کی اجازت یا اس کے علم میں لائے بغیر اپنی مرضی سے کئی مقامات پرایسے بل بورڈ آویزاں کر رکھے تھے جن پر خلاف قانون نعرے تحریر کیے گئے ہیں"۔

ترجمان نے یہ نہیں بتایا کہ شہر میں کون کون سے خلاف قانون نعرے تحریر کیے گئے تھے جنہیں صاف کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ تاہم خبر رساں ایجنسی نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ مٹائے جانے والے نعروں میں امریکا مخالف نعرے شامل ہیں۔

رپورٹ کے مطابق ایران کی مرکزی اور مصروف شاہراہ پر چار نومبر سنہ 1979ء کو تہران میں امریکی سفارت خانے پرمظاہرین کے حملے کے حوالے سے کئی مقامات پرامریکا مخالف سلوگن پر مبنی بورڈ آویزاں کیے گئے تھے۔ انہیں گذشتہ ہفتے ہٹا دیا گیا ہے۔ تہران کی سڑکوں پرامریکی حکام کے رویوں کے اظہار کو نمایاں کرنے والے بورڈز پرایسے کارٹون بھی بکثرت دیکھے جا سکتے ہیں۔

ایک خاکے میں امریکی اور ایرانی مذاکرات کاروں کوایک میز پربیٹھے دکھایا گیا ہے۔ امریکی عہدیدار نے شلوار کے اوپرفوجی کوٹ اور پاؤں میں طویل جوتے پہن رکھے ہیں۔ خاکے کی کیپشن میں "امریکی شفافیت" کے الفاظ درج ہیں۔ اس خاکے سے یہ ظاہر کرنا مقصود ہے کہ امریکا، ایران کے جوہری پروگرام کی آڑ میں تہران پرحملہ کرنا چاہتا ہےاور سفارتی طریقے سے مسئلے کے حل کا خواہاں نہیں ہے۔

نیوز ایجنسی 'فارس' نے ایران میں سائن بورڈ تیار کرنے والی ایک کمپنی" اوج میڈیا" کے ڈائریکٹر احسان محمد حسانی سے رابطہ کیا اور پوچھا کہ ان کی کمپنی اپنی مرضی سے امریکا مخالف نعروں پر مبنی بورڈ تیار کرتی ہے؟ تو انہوں نے بتایا کہ تہران بلدیہ نے خود شہر میں امریکا مخالف بورڈ آویزاں کروا رکھے ہیں۔ ان کی کمپنی صرف آٓرڈر پرایسا مواد تیار کرتی ہے۔