.

ایم بی سی بولی وڈ ایشیائی فلمیں عربی میں ڈب کرکے پیش کرے گا

مشرق وسطیٰ نشریاتی ادارے کے چودھویں فلمی چینل کی نشریات کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مشرق وسطیٰ نشریاتی ادارے (مڈل ایسٹ براڈ کاسٹر) ایم بی سی گروپ نے بولی وڈ کے لیے ایک ''تازہ اپروچ'' اپنانے کا اعلان کیا ہے اور اس مقصد کے لیے اس کے چودھویں چینل نے آج اتوار کی رات سے اپنی نشریات کا آغاز کردیا ہے۔

ایم بی سی بولی وڈ کے نام سے منظرعام پرآنے والا یہ نیا چینل ایشیائی فلمیں عربی زبان میں پیش کرے گا اور انھیں پورے مشرق وسطیٰ اور شمالی افریقہ کے ممالک میں دکھایا جائے گا۔

ایم بی سی کے ترجمان اور شعبہ تعلقات عامہ اور کمرشل کے ڈائریکٹر ماذن ہائیک نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ''عرب ناظرین میں ایشیائی فلموں کا بہت شوق پایا جاتا ہے''۔نئے چینل پر بولی وڈ اور ایشیائی فلموں کے علاوہ ٹی وی سیریز عربی زبان میں ڈب کرکے نشر کی جائیں گی۔نیز بعض فلمیں اور سیریز سب ٹائٹل کے ساتھ بھی پیش کی جائیں گی۔

ایم بی سی گروپ نے اس نئے چینل کو بولی وڈ 2.0 کانام دیا ہے۔اس میں نئے نئے رنگا رنگ پروگرام پیش کیے جائیں گے اور ''پریمئیر مووی نائٹ'' اور''بولی وڈ ایکشن نائٹ'' ایسے پروگرام بھی اس نئے چینل کی نشریات کا حصہ ہوں گے۔

ایم بی سی سے قبل مختلف چینلز عرب ناظرین کے لیے ایشیائی مواد پر مبنی پروگرام پیش کررہے ہیں۔ان میں زی انٹرٹینمنٹ سرفہرست ہے جو بولی وڈ کی فلمیں عربی زبان میں ڈب کرکے نشر کررہا ہے۔

بھارت سے تعلق رکھنے والی اس میڈیا کمپنی نے گذشتہ سال دس کروڑ ڈالرز کی لاگت سے زی علوان کے نام سے عربی زبان کا ایک ٹی وی اسٹیشن شروع کیا تھا۔زی گروپ مشرق وسطیٰ کے ناظرین کے لیے مزید نئے چینل کھولنے کا بھی ارادہ رکھتا ہے۔مشرق وسطیٰ میں نشریات پیش کرنے والے اس طرح کے دوسرے چینلوں میں بی 4 یو مڈل ایسٹ،ٹی وی موویز اورامیجن موویز شامل ہیں۔

ایم بی سی گروپ کے ترجمان ماذن ہائیک کا کہنا ہے کہ ان چینلوں کے باوجود مشرق وسطیٰ کی مارکیٹ میں ایک ایسے ٹی وی چینل کی گنجائش موجود تھی جو بولی وڈ اور ایشیا کی دوسری فلمی صنعتوں کی تیار کردہ فلموں کوعربی زبان میں ڈب کرکے پیش کرے۔

انھوں نے ٹی وی ناظرین کی ایم بی سی گروپ کے مختلف چینلز کے ساتھ رغبت اور وابستگی کے حوالے سے اس توقع کا اظہار کیا ہے کہ ایم بی سی بولی وڈ بھی بہت جلد مارکیٹ میں اپنی حصے داری کے حصول میں کامیاب ہوجائے گا۔

تاہم ان کے بہ قول اس نئے چینل کے ناظرین کی تعداد کے حوالے سے فوری طور پر کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا۔واضح رہے کہ العربیہ ٹی وی چینل اورالعربیہ ڈاٹ نیٹ اردو ،انگریزی ،عربی اور فارسی بھی ایم بی سی گروپ کا حصہ ہیں۔